65 انچ کی اسکرین، جسے تہہ کرکے رکھا جا سکتا ہے

1,188

چند سال پہلے ایل جی نے 18 انچ کا OLED ڈسپلے ظاہر کیا تھا جس میں تہہ ہونے کی صلاحیت تھی اور اسے کسی بھی اخبار کی طرح مروڑ کر رکھا جا سکتا تھا۔ آج وہ پروٹوٹائپ "بڑا ہوکر” 65 انچ کی اسکرین بن چکا ہے، جبکہ ادارے کا کہنا ہے کہ وہ فولڈ ایبل ٹیکنالوجی کو اتنی ترقی دے چکا ہے کہ بڑے ٹیلی وژن بنانا ممکن ہے۔

تہہ کیے جانے کے قابل اس 65 انچ کے نئے ڈسپلے کی رونمائی اس وقت امریکا کے شہر لاس ویگاس میں جاری کنزیومر الیکٹرونکس شو (CES) میں کی جا رہی ہے جو حیران کن طور پر یو ایچ ڈی یعنی 4K ریزولیوشن رکھتا ہے۔

سوال یہ پیدا ہوتا ہے کہ آخر ایسے ٹیلی وژن کی ضرورت کیا ہے؟ دراصل تہہ کرنے کی صلاحیت اسے اسٹور میں محفوظ رکھنے اور نقل و حمل میں آسان بناتی ہے، لیکن ان سے بڑھ کر یہ سائنس فکشن لگتا ہے۔ پھر اتنا لچکدار ہونا کہ تہہ کرلیا جائے، یہ ڈسپلے پینل کو زیادہ نامیاتی اور فطری بناتا ہے۔ یہ کسی مصور کے بڑے کینوس جیسا ہے یا کسی بہت بڑے کاغذ جیسا۔

اس کے بارے میں بنیادی معلومات سے بڑھ کر کچھ نہیں بتایا گیا، لیکن یہ 65 انچ کا پروٹوٹائپ مستقبل کا ایک نمونہ پیش کرتا ہے اور امید ہےکہ بہت جلد حقیقت کا روپ دھار کر عام انسانوں کے زیر استعمال آئے گا۔