اب کمپیوٹر پر کھڑے ہوکر کام کرنا پڑے گا

1,305

ایپل کے سی ای او ٹم کُک کے ایک حالیہ انٹرویو کے دوران معلوم ہوا ہے کہ وہ ایپل پارک میں ملازمین کو ایسی میزوں پر کام کروا رہے ہیں جن پر کھڑے ہوکر کام کیا جا سکتا ہے۔ کُک کے اپنے الفاظ میں "ہم نے تمام ملازمین کو ایسی میزیں دی ہیں۔ اگر آپ کچھ دیر کھڑے رہیں، پھر بیٹھیں اور اسی طرح کام کرتے رہیں تو یہ آپ کے طرز زندگی کے لیے بہتر ہے۔”

یہ میزیں ملازمین کو بیٹھ کر اور کھڑے ہوکر دونوں طریقے سے کام کرنے کی سہولت دیتی ہیں۔ کک نے اس سے پہلے کہا تھا کہ ” اگر میں بہت دیر تک بیٹھا رہوں تو ایپل واچ مجھے اٹھنے اور حرکت کرنے کا کہتی ہے کیونکہ بہت سارے ڈاکٹر بیٹھے رہنے کو نیا کینسر کہتے ہیں۔ گھنٹہ ہونے سے دس منٹ قبل ایپل واچ مجھے حرکت کرنے کا کہتی ہے۔”

یہ تفصیلات تو نہیں دی گئیں کہ کون سی میزوں کا انتخاب کیا گیا ہے لیکن ایک جھلک کیمپس کے انٹیریئر کی تصاویر سے نظر آتی ہے۔

ان میزوں کے ساتھ ایپل نے Aeron کے بجائے Vitra کرسیوں کا انتخاب کیا ہے، کیونکہ کمپنی نہیں چاہتی کہ ان کا عملہ بہت دیر تک کرسیوں پر آرام سے بیٹھا رہے۔