اب فٹ بال میں فیصلے ہوں گے ٹیکنالوجی کی مدد سے

871

فٹ بال کی عالمی انجمن "فیفا” نے بالآخر روس میں ہونے والے ورلڈ کپ کے دوران ریفریز کی مدد کے لیے وڈیو ریویو کی منظور دے دی ہے۔ فیفا کے صدر گیانی انفنٹینو نے اعلان کیا کہ وڈیو اسسٹنٹ ریفریز (VAR) کے ساتھ پہلے ورلڈ کپ کی منظوری دے دی گئی ہے۔ وہ عرصے سے اس کی حمایت میں تھے اور اس پیشرفت پر خوشی کا اظہار بھی کیا ہے۔

وی اے آر یعنی وڈیو اسسٹنٹ ریفریز کو قانون کاحصہ بنانے میں فیفا کے پینل کو دو ہفتے لگے۔ اب ریفریز کسی بھی واضح یا ممکنہ غلطی کو ٹھیک کرنے یا کسی سنجیدہ واقعے کے نظروں میں نہ آنے پر وی اے آر کو ریویو کا کہہ سکتے ہیں اور نتیجے میں فیصلہ تبدیل کیا جائے گا۔ اس میں گولز، پنالٹی، ریڈکارڈز اور دیگر فیصلے شامل ہوں گے۔

دنیا بھر میں ڈیڑھ سال تک ہونے والے ٹرائل میں، جس میں 2017ء کے کنفیڈریشن کپ کے ساتھ ساتھ بنڈس لیگا اور سیری آ بھی شامل رہیں، ریویوز توقع سے کہیں زیادہ سست نظر آئے۔ بہرحال جون میں شروع ہونے والے ورلڈ کپ کے لیے فیفا نے 36 ریفریز اور ان کے اسسٹنٹس کو تربیت دی ہے ۔ دیکھنا یہ ہے کہ کسی بھی کھیل کے سب سے بڑے عالمی مقابلوں میں یہ ٹیکنالوجی کس طرح کام کرتی ہے۔

واضح رہے کہ کرکٹ میں ٹیکنالوجی کا استعمال کم از کم 25 سال سے ہو رہا ہے جب پہلی بار ٹیلی وژن امپائر کو رن آؤٹ اور دیگر فیصلوں کا اختیار دیا گیا تھا۔ آج کرکٹ میں رن آؤٹ سے لے کر ایل بی ڈبلیو تک کے تمام نازک فیصلے جدید ٹیکنالوجی کی مدد سے کیے جاتے ہیں۔