اب اوبر کے سیلف-ڈرائیونگ ٹرک بھی

1,188

اوبر نے آج اعلان کیا ہے کہ اس کے خودکار طور پر چلنے والے ٹرک گزشتہ چند ماہ سے امریکی ریاست ایریزونا میں کام کر رہے ہیں۔ کمپنی کا کہنا ہے کہ اس کے دو مراکز سینڈرز اور ٹوپوک میں ہے، لیکن اس کے علاوہ اوبر نے اس معاملے پر اپنی زبان بند ہی رکھی ہوئی ہے۔ مثال کے طور پر یہ نہیں بتایا کہ کتنے ٹرک زیر استعمال ہیں، وہ کتنے میل چل چکے ہیں، وہ کون سا مال لے جا رہے ہیں اور اس خودکار نظام میں کتنا وقت ڈرائیورز سنبھالتے ہیں، صرف اتنا بتایا گیا ہے کہ ٹرک اب تک ہزاروں مرتبہ سفر کر چکے ہیں۔

یہ سسٹم کس طرح کام کررہا ہے اس بارے میں ذیل میں وڈیو دیکھی جا سکتی ہے۔ اصل خیال یہ ہے کہ ایک عام ٹرک ایک جگہ سے مال اٹھائے اور اسے مرکز تک پہنچائے۔ یہاں اوبر کا سیلف-ڈرائیونگ ٹرک، اور ایک سیفٹی ڈرائیور، ٹرالر کو اٹھائے گا اور اسے طویل سفر پر لے جائے گا۔ اپنی منزل تک پہنچنے سے پہلے یہ ایک مرتبہ پھر مقامی مرکز تک جائے گا، جہاں پھر ایک عام ٹرک اور ڈرائیور مال کو منزل مقصود تک پہنچائے گا۔ اس شپمنٹ کی تفصیلات اوبر فریٹ سنبھالے گا جو گزشتہ مئی میں کمپنی کی لانچ کردہ ایپ تھی جو مال بھیجنے والوں اور ٹرک ڈرائیورز کو باہم جوڑتی ہے۔

اوبر نے 2016ء میں سیلف-ڈرائیونگ ٹرک کے ساتھ پہلی ڈلیوری کی تھی جس کے ذریعے اس نے فورٹ کولنز، کولوراڈو سے کولوراڈو اسپرنگ تک سامان پہنچایا تھا۔ اوبر نے اسی سال اوٹو (Otto) نامی کمپنی خریدی تھی اور یہ سیلف-ڈرائیونگ ٹرک اسی کا نتیجہ ہے۔