اگلے آئی فون میں انقلابی تبدیلیاں متوقع

1,425

بلوم برگ میں شائع ہونے والی ایک رپورٹ کے مطابق ایپل اپنے آئندہ آئی فون میں دو انقلابی تبدیلیاں لا رہا ہے۔ جن میں سے ایک اس کی اسکرین کو بغیر چھوئے کنٹرول کرنے والا نظام یعنی Touchless Gesture Control اور دوسرا خمیدہ Curved اسکرین کا استعمال ہے۔

خبر کے مطابق اول الذکر نظام میں آئی فون کے صارفین اس کی اسکرین کو چھوئے بغیر ہوا میں انگلیوں کی حرکت سے کنٹرول کر سکیں گے۔ گو کہ یہ ٹیکنالوجی ابھی ابتدائی مراحل میں ہے اور اسے کمرشل سطح پر متعارف کروانے میں دو سال کا عرصہ لگ سکتا ہے لیکن ایپل کے متعلق یہ دعویٰ کیا جا رہا ہے کہ اس کا اگلا آئی فون اس ٹیکنالوجی سے لیس ہو گا۔

قارئین کو یاد ہو گا کہ ایپل اپنی تاریخ میں ہمیشہ انقلابی ٹیکنالوجیز متعارف کروانے میں پیش پیش رہا ہے۔ مثلاً ایپل بانی اسٹیو جابز نے اسی کی دہائی میں کمپیوٹر سافٹ وئیرز کو استعمال کرنے کے لیے ماؤس متعارف کروایا تھا۔ حال ہی میں ایپل کے آئی فون میں 3D ٹچ جیسی خوبی متعارف کروائی گئی ہے جس میں اسکرین انگلی کے مختلف دباؤ کو مختلف طور پر محسوس کرکے اسی کے مطابق ردعمل دیتی ہے۔ جبکہ انگلی سے چھوئے بغیر اسکرین کو کنٹرول کرنا اس میں ایک اور جدید اضافہ ہے۔

اس کے علاوہ دوسری بڑی تبدیلی ڈسپلے اسکرین کا بالائی سطح سے نچلی جانب درون قوسی شکل کا ہونا ہے۔ عمومی طور پر آئی فونز کے تمام ماڈلز کی اسکرین ہموار ہوتی ہے۔ گو کہ حالیہ آئی فون ماڈل میں اس کی نامیاتی ایل ای ڈی اسکرین نچلی سطح پر معمولی سی خم دار ہے۔ لیکن یہ خمیدگی بظاہر انسانی آنکھ سے نظر نہیں آتی۔ حالانکہ نامیاتی ایل ای ڈی اسکرین کو مکمل طور پر موڑا حتی کہ فولڈ بھی کیا جا سکتا ہے۔ اسی خوبی کو مدنظر رکھتے ہوئے ایپل نے اس سے اگلے آئی فون میں استفادہ حاصل کرنے کا فیصلہ کیا ہے۔

بعض خبریں یہ بھی ہیں کہ ایپل اپنے آئندہ آئی فون کا ڈسپلے مائیکرو ایل ای ڈی سے تیار کرے گا۔ لیکن یہ ابھی قبل از وقت ہے۔ کیونکہ اس بارے میں ایپل کی جانب سے فی الحال کوئی تردید یا تصدیق سامنے نہیں آئی ہے۔