اگلے سال چاند پر 4جی نیٹ ورک کی تیاریاں

1,278

اگر چند بلند حوصلہ اداروں کو موقع ملا تو 2019ء تک چاند اپنا4جی نیٹ ورک پا سکتا ہے۔

ووڈافون، نوکیا اور آڈی چاند پر ایک 4جی نیٹ ورک لانے کے لیے پی ٹی سائنٹسٹس (PTScientists)کے ساتھ شراکت داری کر رہے ہیں جو اگلے سال کسی وقت اسپیس ایکس کے فیلکن 9 راکٹوں میں سے ایک میں بھیجا جائے گا۔

4جی نیٹ ورک الٹرا کمپیکٹ نیٹ ورک نامی ٹیکنالوجی کی مدد سے تخلیق کیا جائے گا، جو نوکیا کے مطابق ایک تھیلا چینی کے وزن کی ہوتی ہے۔

پی ٹی سائنٹسٹس کے سی ای او رابرٹ بوہمی نے ایک بیان میں کہا ہے کہ "یہ نظام شمسی کی ماحول دوست کھوج کی جانب پہلا اہم قدم ہے۔ زمین کے گہوارے کو چھوڑنے کے لیے انسانوں کو اپنے گھر سے باہر بنیادی ڈھانچہ تعمیر کرنے کی ضرورت ہے۔ اس مشن کے ذریعے ہم چاند پر باضابطہ کمیونی کیشنز نیٹ ورک کے ابتدائی مراحل مکمل کرکے انہیں ٹیسٹ کریں گے۔”

اصل میں پی ٹی سائنٹسٹس کا قیام 20 ملین ڈالرز کے گوگل لیونر ایکس پرائز کے لیے عمل میں آیا تھا جو اس پہلے نجی ادارے کو دیا جانا تھا جو بغیر انسان کے کسی بھی اسپیس کرافٹ کو چاند پر پہنچائے اور چند بنیادی اہداف مکمل کرے۔ اس میں ہائی ڈیفی نیشن وڈیو اور تصاویر چاند سے واپس زمین پر بھیجنا بھی شامل تھا۔ انعامی سلسلہ تو مکمل ہوا لیکن پی ٹی سائنٹسٹس اب بھی چاند کے لیے اپنے مشن سے وابستہ ہیں۔

مشن ممکنہ طور پر دو آڈی کواٹرو روورز (Quattro rovers) چاند پر لے جائے گا، اور 4جی نیٹ ورک ان دونوں کو ایک دوسرے کے ساتھ رابطہ کرنے میں مدد دے گا۔ یہ روورز 1972ء میں خلاء بازوں کو چاند پر لے جانے والے اپالو 17 روور کی تلاش کے دوران ایچ ڈی وڈیو ریکارڈ کریں گے۔

This website uses cookies to improve your experience. We'll assume you're ok with this, but you can opt-out if you wish. Accept