ایک سال میں 175 ارب ایپس ڈاؤنلوڈز

917

عالمی ایپ ڈاؤنلوڈز 2017ء میں 175 ارب تک پہنچے اور صارفین نے ان پر 86 ارب ڈالرز سے بھی زیادہ خرچ کیے۔ اس کی وجہ ہے چین، بھارت، برازیل اور روس جیسی ابھرتی ہوئی مارکیٹیں کہ جہاں دن دوگنی اور رات چوگنی ترقی ہو رہی ہے۔

ایپ اینی کی نئی رپورٹ کے مطابق ڈاؤنلوڈز کے اعتبار سے بھارت امریکا کو پیچھے چھوڑتے ہوئے دوسرے نمبر پر آ چکا ہے ۔ چین بہت عرصے سے اس معاملے میں سب سے آگے ہے اور اب بھی نمبر ایک ہے۔

گزشتہ سال بھارت کا ڈاؤنلوڈز کے اعتبار سے دوسرے نمبر پر آنا ایک بڑی تبدیلی ہے۔ گزشتہ دو سال میں ملک میں ڈاؤنلوڈز میں 215 فیصد اضافہ ہوا ہے، جبکہ چین میں یہ 125 فیصد اضافہ ہے جبکہ امریکا میں منفی 5 فیصد۔ ایپ اینی کا کہنا ہے کہ اس کی وجہ بھارت میں ستمبر 2016ء میں لامحدود اور کم قیمت 4جی رسائی دینا ہے جس نے صارفین کی بڑی تعداد کو آن لائن دنیا میں لانے میں مدد دی۔

ایپ اینی کی رپورٹنگ اور سینسر ٹاور کی حالیہ رپورٹ میں ملنے والے اعداد و شمار میں فرق کی وجہ دراصل ڈیٹا جمع کرنے کا طریقہ ہے۔ سینسر ٹاور آئی او ایس ایپ اسٹور اور گوگل پلے سے اعداد و شمار جمع کرتا ہے جبکہ ایپ اینی تھرڈ پارٹی اینڈرائیڈ اسٹورز کو بھی تجزیے میں شامل کرتا ہے اور اسی وجہ سے چین کے اعداد و شمار اکٹھے ہوتے ہیں کہ جہاں گوگل پلے موجودگی نہیں رکھتا۔

بہرحال، رپورٹ کے مطابق بیشتر مارکیٹوں میں اسمارٹ فون صارف اوسطاً اپنے فون میں 80 ایپس رکھتا ہے ہر ماہ 40 کے قریب استعمال کرتا ہے۔

صارفین اوسطاً روزانہ تین گھنٹے ایپس پر گزارتے ہیں اور یہ 2015ء سے اوسط روزانہ وقت میں تقریباً 30 فیصد کا اضافہ ہے۔

جہاں تک معاملہ آمدنی کا ہے تو اس میں امریکا ہرگز پیچھے نہیں۔ وہ اب بھی دوسرے نمبر پر ہے۔

ایپ اسٹورز میں صارفین کے خرچ کرنے کے رحجان میں گزشتہ دو سالوں میں دو گنا اضافہ ہوا ہے اور 2017ء کے اختتام تک یہ 86 ارب ڈالرز تھا۔ تمام بڑی مارکیٹوں میں ہمیں اس دوران بڑا اضافہ دیکھنا کو ملا جیسا کہ چین 270 فیصد، جس کے بعد امریکا 75 فیصد، بھارت 60 فیصد، برازیل 80 فیصد اور روس 35 فیصد۔

ایپ اینی کا کہنا ہے کہ 2018ء میں صارفین ایپس پر 110 ارب ڈالرز خرچ کریں گے۔ آپ مکمل رپورٹ اس لنک سے طلب کر سکتے ہیں۔