کرپٹو کرنسی کے خلاف ٹوئٹر بھی میدان میں

فیس بک اور گوگل کے بعد اب لگتا ہے کہ کرپٹوکرنسی کی مصنوعات کے خلاف کریک ڈاؤن کرنے والا اگلا ادارہ ٹوئٹر ہوگا۔ ذرائع کے مطابق یہ سوشل نیٹ ورک اگلے دو ہفتوں میں آئی سی او، کرپٹو کرنسی والٹس اور ٹوکن سیلز پر عالمی سطح پر پابندی لگائے گا اور عین ممکن ہے کہ یہ پابندی کسی حد تک کرپٹو کرنسی ایکسچینجز پر بھی لگائی جائے۔

گو کہ ابھی تک ٹوئٹر کی جانب سے اس کا اشارہ تک نہیں کیا گیا، اور نہ ہی وجوہات کا علم ہے کہ ایسا کیوں کیا جائے گا؟ لیکن لیکن گوگل اور فیس بک کے اقدامات سے یہی ظاہر ہوتا ہے کہ ایسا اپنے صارفین کو کسی ممکنہ خطرے سے بچانا ہو سکتا ہے۔ بلاشبہ کوئی بھی کرپٹو کرنسی یقینی نتائج نہیں دے سکتی ہے اور آجکل جس طرح بھانت بھانت کی کرپٹو کرنسیاں جنم لے رہی ہیں، اس میں بہت زیادہ خطرہ ہے کہ کوئی صارفین کا پیسہ لے کر بھاگ بھی جائے۔ اب تک کوئی ایسے قانون یا ضابطے نہیں بنے جو گوگل، فیس بک اور ٹوئٹر جیسے اداروں کو قائل کر سکیں اور یہی وجہ ہے کہ ان کے پاس سوائے اشتہارات پر پابندی لگانے کے کوئی اور راستہ نہیں بچتا۔

2017ء میں ایک ناقابل یقین سال گزارنے کے بعد یہ سال اب تک کرپٹو کرنسی کے لیے بدترین ثابت ہوا ہے۔ اس وقت بٹ کوائن سمیت بیشتر بڑی کرپٹو کرنسیز تیزی سے زوال پذیر ہیں اور اس صورت حال میں اگر ٹوئٹر کا اعلان بھی سامنے آ گیا تو مارکیٹ کا حال اور برا ہو جائے گا۔

اشتہاراتٹوئٹرکرپٹو کرنسی