گوگل نے کرپٹو کرنسیز پر پابندی لگا دی

جون سے کرپٹو کرنسی اور آئی سی او (initial coin offerings) کے تمام اشتہارات گوگل سے غائب ہو جائیں گے، کیونکہ ادارہ ان مالیاتی مصنوعات کو غیر قانونی یا فرضی سمجھتا ہے۔

گوگل کہتا ہے کہ اس کا ہدف کرپٹو کرنسیز، بائنری آپشنز، فارن ایکسچینج مارکیٹوں اور آئی سی اوز کے اشتہارات کو بند کرنا ہے۔ یہ قدم سرچ کے نتائج میں آنے والے اشتہارات، یوٹیوب پر اور ساتھ ہی کمپنی کے ایڈ پلیٹ فارم کے ذریعے تھرڈ پارٹی سائٹس پر موجود اشتہارات پر اٹھایا جائے گا۔

اس وقت آپ بٹ کوائن لکھ کر سرچ کریں تو سب سے اوپر "اشتہار” والا لنک آئے گا لیکن پالیسی کی تبدیلی کے ساتھ ہی اس کا خاتمہ ہو جائے گا۔

گوگل نے دراصل فیس بک کی پیروی کی ہے، جس نے حال ہی میں ایسی ہی پابندی عائد کی اور کہا تھا کہ یہ اشتہارات صارفین کو گمراہ کر رہے ہیں۔

گوگل نے ایک علیحدہ بلاگ میں بتایا ہے کہ 2017ء میں کمپنی نے پالیسی کی خلاف ورزی پر 3.2 ارب اشتہارات ہٹائے تھے کیونکہ ویب پر اشتہارات کا تجربہ بہتر بنانا گوگل کی پہلی ترجیح ہے۔

آئی ایم ایف کی سربراہ کرستین لاگاردے نے کہا ہے کہ "کرپٹو کرنسیوں کا تیزی سے ابھرنا، ان کی قیمتوں میں بہت زیادہ تیزی سے تبدیل ہونا اور بین الاقوامی مالیاتی دنیا سے رابطہ نہ ہونا بہت زیادہ خطرناک کا باعث بن سکتا ہے۔”

کرپٹو کرنسیگوگل