گوگل نے ٹیبلٹس بیچنا بند کردیے

گوگل آہستہ آہستہ ٹیبلٹ بزنس سے باہر نکل رہا ہے اور اس نے بہت خاموشی سے اپنے اینڈرائیڈ پیج کی سرخیوں میں سے "Tablets” کو نکال دیا ہے۔ یہ سمجھ کر کہ شاید کسی کو احساس نہیں ہوگا لیکن یہ بات پکڑی گئی ہے اور کافی پھیل چکی ہے۔

ویسے تو 2016ء میں ہی کسی نے کہہ دیا تھا کہ ٹیبلٹ کا زمانہ اب ختم ہو چکا ہے، لیکن حقیقت یہ ہے کہ یہ کہنا قبل از وقت تھا۔ گزشتہ سال 160 ملین نئے ٹیبلٹس مارکیٹ میں فروخت ہوئے ہیں۔ ہاں! یہ کہا جا سکتا ہے کہ یہ آہستہ آہستہ خاتمے کی جانب بڑھ رہے ہیں۔

گوگل ٹیبلٹ کی دنیا میں آئی پیڈ کا مقابلہ کرنے میں ویسے بھی ناکام رہا ہے اور اب تو واضح طور پر محسوس ہو رہا ہے کہ وہ کروم او ایس پر زیادہ توجہ دے رہا ہے۔ جہاں وہ اس آپریٹنگ سسٹم کو اینڈرائیڈ کے ساتھ ملانے اور مزید پھیلانے کے لیے کام کر رہا ہے۔

یہی وجہ ہے کہ ایک طرف جہاں ایپل کی جاندار آئی پیڈ مصنوعات نے صارفین کو کسی دوسرے ٹیبلٹ کا انتخاب نہیں کرنے دیا، وہیں پر ایمیزن کے بچوں کے لیے پیش کردہ ٹیبلٹس نے بھی ایک بڑی مارکیٹ ہتھیا لی، کیونکہ وہ بہت سستے بھی ہیں اور والدین کے فونز کی زندگی بڑھانے کا باعث بھی کیونکہ وہ بچے کے ہتھے چڑھنے سے بچ جاتے ہیں۔

پھر بھی گوگل کا یہ قدم اینڈرائيڈ ٹیبلٹس کے خاتمے کا اعلان نہ سمجھا جائے۔ اب بھی، سام سنگ اور ایمیزن سمیت مختلف ادارے اینڈرائیڈ ٹیبلٹس پیش کر رہے ہیں، بس فرق اتنا ہے کہ گوگل خود نہیں بیچے گا اور ان کے فیچرز اور سپورٹ کو ترجیح نہیں دے گا۔

اپڈیٹ: ٹیبلٹ کا حصہ کسی مسئلے کی وجہ سے اینڈرائیڈ کی ویب سائٹ سے اڑ گیا تھا۔ اب یہ واپس آ گیا ہے۔ اب ہو سکتا ہے کہ جب اسے واقعی اڑایا جائے تو ہمیں حیرت نہ ہو 😉

ٹیبلٹسگوگل