ہواوی واچ 2، ای-سم کے ساتھ

گوگل کے ویئریبلز کے لیے آپریٹنگ سسٹم ‘ویئر او ایس‘ کو حالیہ چند ماہ میں بہت زیادہ ہارڈویئر نہیں ملے، لیکن ہواوی نے اپنی ہواوی واچ 2 لائن اپ کے ذریعے کئی صارفین کو یہ موقع دیا ہے کہ اس او ایس کو آزمائیں۔ ہواوی نے چینی مارکیٹ کے لیے اپنے ہارڈویئر کا تازہ ترین ورژن باضابطہ طور پر متعارف کروا دیا ہے۔

چین میں فروخت کے لیے پیش کردہ ہواوی واچ 2 (2018) ہواوی کی موجودہ ویئر او ایس پیشکش سے زیادہ مختلف نہیں۔ مجموعی طور پر ڈیزائن، خصوصیات یہاں تک کہ قیمت بھی لگ بھگ وہی ہے جو پہلے تھی۔ اس گھڑی میں آپ کو ملے گا کویلکوم کا اسنیپ ڈریگن 2100 چپ سیٹ، 768 ایم بی ریم، 4 جی بی اسٹوریج اور ویئر او ایس۔

کیونکہ گھڑی کو چین میں فروخت کے لیے پیش کیا گیا ہے اس لیے اس کا بلٹ-ان این ایف سی علی پے، ہواوی پے اور وی چیٹ کے پیمنٹ سسٹم پر کام کرتا ہے، گوگل پے پر نہیں۔ ویئر او ایس نے چینی مارکیٹ کے لیے کچھ تبدیلیاں تو کی ہیں، لیکن مجموعی طور پر یہ لگ بھگ ویسا ہی او ایس ہے جیسا دنیا بھر میں موجود ہے۔

سب سے بڑی تبدیلی ای-سم ویریئنٹ کی پیشکش ہے۔ یعنی اس گھڑی میں سم تو نہیں لگائی جا سکتی، لیکن یہ سیلولر سروسز سے منسلک ہو سکتی ہے تاکہ آپ اسٹریمنگ میوزک، ویب سروسز تک رسائی اور بلٹ-اِن جی پی ایس ٹریکنگ کا استعمال کر سکیں۔یہ نیا ای-سم آپشن نئے "کاربن بلیک” ویریئنٹ میں ہے جو اندر سے شوخ پیلے رنگ کا ہے اور بہت ہی خوبصورت نظر آتا ہے۔ اگر آپ نینو-سم ماڈل کا انتخاب کریں گے تو وہ بھی دستیاب ہوگا، اور صرف بلوٹوتھ ماڈل بھی۔ سیلولر ماڈل کی قیمت 310 ڈالرز ہے جبکہ بلوٹوتھ کی 240 ڈالرز۔

ہواویویئر او ایسویئرایبلز