کیا آپ انرجائزر کا یہ فون خریدیں گے؟

یہ تو مجھے آج ہی پتہ چلا ہے کہ بیٹری سیل وغیرہ بنانے والی مشہور کمپنی "انرجائزر (Energizer) سالوں سے اسمارٹ فونز بھی فروخت کر رہی ہے۔ دوسرے الفاظ میں یہ کہا جا سکتا ہے کہ ایسے فون بیچتی ہے جن پر انرجائزر کا برانڈ اور لوگو موجود ہوتا ہے۔ خیر، ایک ایسی دنیا میں جہاں کوڈیک سیلفی اسٹکس اور ہیڈفونز بیچے، وہاں انرجائزر کی اینڈرائیڈ ڈیوائسز بکنا اتنا حیران کن بھی نہیں۔

بہرحال، انرجائزر کا نیا فون ایوینر ٹیلی کام کا تیار کردہ ‘انرجائزر پاور میکس پی600 ایس‘ فون ہے جو شکلاً ایل جی کے وی 30 سے ملتا ہے۔ کیونکہ یہ ‘انرجائزر’ برانڈ ہے اس لیے لازمی بات ہے کہ پہلی خصوصیت جاندار بیٹری ہوگی۔ اس فون میں 4500 ایم اے ایچ کی بیٹری ہے جبکہ اس کی پشت پر ڈوئل کیمرا سسٹم اور فنگر پرنٹ سینسر بھی ہے۔ اس ڈیوائس میں آپ کو ملے گی 6 جی بی ریم اور 64 تک کی جی بی اسٹوریج، جسےبڑھایا بھی جا سکتا ہے۔ اس کی 6 انچ کی اسکرین 2160 ضرب 1080 پکسلز کا ریزولیوشن رکھتی ہے اور قیمت کم رکھنے کے لیے اس میں میڈیاٹیک چپ استعمال کی گئی ہے اور اس میں ہے اینڈرائیڈ نوگیٹ ، یعنی دو سال پرانا آپریٹنگ سسٹم ۔

ایک نسبتاً سستی چپ کا استعمال اور نئے آپریٹنگ سسٹم پر اپگریڈ ہونے کے موہوم سے امکانات کے باوجود یہ فون ہے کم از کم 350 ڈالرز کا، وہ بھی 32 جی بی اسٹوریج اور 3 جی بی ریم والا ۔ اگرآپ 64 جی بی اسٹوریج اور دوگنی ریم کا انتخاب کریں گے تو قیمت ہو جائے گی 440 ڈالرز !

یہ فروری سے یورپ بھر میں دستیاب ہوگا اور سال کی دوسری سہ ماہی میں امریکا میں بھی فروخت کے لیے پیش ہوگا۔ لیکن کیا آپ 440 ڈالرزخرچ کرکے یہ لینا چاہیں گے؟ ہم سے کوئی پوچھے تو جواب بہت واضح ہوگا، “نہیں!”

اسمارٹ فونانرجائزر