مریخ پر زندگی کی تلاش کے لیے ناسا کا تاریخی انسائٹ مشن روانہ

"تین۔۔۔۔۔دو۔۔۔۔۔۔ایک۔۔۔۔۔ لفٹ آف”
امریکی سائنسدان کے ان الفاظ کے ساتھ ہی مریخ کی سر زمین پر بھیجا جانے والا ناسا کا تاریخی "ان سائیٹ” مشن خلاء کی جانب روانہ ہو گیا۔

یہ مشن اٹلس 5 نامی راکٹ کے ذریعے کیلیفورنیا میں موجود وانڈن برگ ائیر فورس بیس سے پاکستانی وقت کے مطابق آج بروز سنیچر شام 4 بج کر 5 منٹ پر روانہ کیا گیا۔

انسائیٹ مشن تقریباً چھ ماہ بعد 30 کروڑ میل سفر طے کر کے 26 نومبر 2018 کو مریخ کی سر زمین پر اترے گا۔ اگر تمام مراحل بخیر وخوبی سر انجام پائے تو انسائیٹ کو حفاظتی حرارتی شیلڈ، پیراشوٹ، اور مدھم رفتار راکٹ انجن کی مدد سے مریخ کی سر زمین پر خطِ استوا کے شمالی جانب ایلیسیم پلانیشیا نامی علاقے میں اتارا جائے گا۔

لفظ انسائیٹ Insight دراصل ” حرارتی ترسیل، علم پیمائش ارض اور بھونچالی تحقیقات کی مدد سے اندرونی دریافت” کا مخفف ہے۔ جیسا کہ نام سے ہی ظاہر ہے کہ اس مشن کے ذریعے مریخ کی سر زمین پر آواز کی لہروں کے ذریعے زیرزمیں آنے والے زلزلوں اور دیگر عوامل کی پیمائش کرتے ہوئے مریخ کی اندرونی ساخت کا پتہ لگایا جائے گا۔

یہ بالکل ایسے ہی ہے جیسے حاملہ ماں کے پیٹ میں موجود بچے سے منعکس ہونے والی بالاصوتی لہروں سے اس کے وجود کا پتہ چلتا ہے۔ بلکل اسی طرح انسائٹ کی مدد سے مریخ کے کور کی جسامت، قشر کی موٹائی اور بیرونی تہہ کی خصوصیات وغیرہ کا پتہ لگایا جائے گا۔

ان افعال کو انجام دینے کے لیے دریافت کنندہ کے ساتھ تقریباً 2.4 میٹر لمبا روبوٹک بازو لگایا گیا ہے۔ جو کہ سطح پر نا صرف زلزلہ پیما کی تنصیب کرے گا۔ بلکہ مریخ کی بیرونی تہہ میں تقریباً 5 میٹر گہری کھدائی بھی کرے گا۔ جو کہ اس سے پہلے ناسا کے مریخ پر بھیجے گئے مختلف مشنز کی کھدائی سے 15 گنا زیادہ گہرائی ہے۔

ناسا ترجمان کا کہنا ہے کہ اس سے پہلے ہم مریخ کی سر زمین کا جغرافیائی مطالعہ اور نقشہ سازی کر چکے ہیں۔ جبکہ اس بار انسائٹ مشن کے ذریعے سیارے کے نسبتاً گہرے علاقوں میں بھی پہنچ پائیں گے۔ اور مشن کے دوران تفصیلی تجزیات سے یہ پتہ لگانے میں مدد ملے گی کہ سیارے کی ابتداء کس طرح ہوئی؟ آیا کہ زیرزمیں زندگی کے آثار موجود ہو سکتے ہیں؟ نیز اس سے ہمیں کائنات اور زندگی کی ابتداء کو سمجھنے میں بھی مدد ملے گی۔

انسائیٹ مشن کے روانہ ہونے کی ویڈیو دیکھیے۔۔۔

نیچے دی گئی ویڈیو کے ذریعے جانیے کہ یہ مشن کیسے کام کرے گا۔