نوکیا کا ‘کیلا فون’ ایک مرتبہ پھر

موبائل ورلڈ کانگریس میں زیادہ تر ادارے اپنی سال کی پہلی اسمارٹ فون لانچنگ کرتے ہیں اور یہ کافی مستحکم روایت ہے، لیکن ایچ ایم ڈی گلوبل نے نہ صرف پچھلے سال بلکہ اس مرتبہ بھی اس روایت کو توڑ کر سب کو حیران کیا ہے، انہوں نے لانچ کیا ہے ایک نیا فیچر فون۔ نوکیا کو فروخت کرنے والے HMD کے مارکیٹنگ طریقے بڑے حیران کن ہیں، جیسا کہ اس نے مشہور زمانہ نوکیا 3310 کی ری لانچنگ کا اعلان کیا اور اس سال بھی یہی طریقہ آزمایا اور نیا "نوکیا 8110 ری لوڈڈ” جاری کیا ہے۔

دو دہائی پہلے جاری کیا گیا 8110 وہی فون ہے جو آپ کو ویسے یاد ہویا نہ ہو، لیکن 1999ء کی فلم "میٹرکس” کے منظر سے ضرور یاد ہوگا۔ شاید اس فون کو ری لوڈڈ بھی اسی نسبت سے کہا گیا ہے۔

3310 کی طرح نیا 8110 بھی 20 سال پرانے ہینڈسیٹ کی کاربن کاپی نہیں ہے۔ یہ ویسا ہی ڈیزائن رکھتا ہے، جو ہو سکتا ہے اپنی لمبائی کی وجہ سے آپ کی جیب میں آسان محسوس نہ ہو لیکن یاد رکھیں اب اس میں وہ انٹینا نہیں ہے۔ درحقیقت یہ 8110 سے چھوٹا ہی ہے، لیکن اتنا نہیں جتنا اسے بنایا جا سکتا تھا۔ ننھے اور خوبصورت 3310 کے مقابلے میں نیا 8110 زیادہ لمبا اور بھاری ہے جو عام طور پر فیچر فونز ہوتے ہیں۔

بہرحال، معمولی سا خم رکھنے والے اس فون کو ‘بنانا فون’ بھی کہا جاتا تھا جس میں اب ایسی خصوصیات شامل کردی گئی ہیں، جو گزشتہ صدی کے اواخر میں کسی کے تصوّر میں بھی نہیں تھیں جیسا کہ 2.4 انچ کی رنگین اسکرین، "اسنیک” کا جدید ترین ورژن، 2 میگاپکسل کا کیمرا، کہیں زیادہ بہتر سافٹویئر، وائی فائی اور ایک 4 جی موڈیم بھی۔ نئے 3310 کے مقابلے میں 8110 کا براؤزر کہیں بہتر ہے اوریہ ویب سائٹس کو زیادہ بہتر دکھا سکتا ہے۔ البتہ اتنی چھوٹی اسکرین پر براؤزنگ کرنا آپ کے صبر کا امتحان ضرور ہوگا۔ البتہ ڈیٹاکنیکشن کا فائدہ اٹھانے کے لیے اس میں چند معروف ایپس ضرور شامل کی گئی ہیں جیسا کہ ٹوئٹر، فیس بک اور فیس بک میسنجر۔ کاش کہ انسٹاگرام، واٹس ایپ یا اسنیپ چیٹ کا بھی کچھ کیا جاتا۔ بہرحال، بیٹری لائف جاندار ہے، 25 دن کی!

نوکیا عام طور پر ان فونز کی "کامیاب” فروخت کے بارے میں نہیں بتاتا لیکن یہ حقیقت ہے کہ پاکستان جیسے کئی ممالک میں اب بھی فیچر فونز کی بڑی مارکیٹ موجود ہے۔ لوگ اسے ایسے فونز بیک اپ کے طور پر بھی لیتے ہیں اور کچھ اپنے والدین کے لیے بھی خریدتے ہیں جو اسے محض فون کالز کے لیے استعمال کرتے ہیں۔

ایچ ایم ڈی کا کہنا ہے کہ یہ فون مئی سے سیاہ اور پیلے رنگوں میں دستیاب ہوگا اور اس کی قیمت 79 یورو ہوگی یعنی نوکیا ہی کے ہلکے پھلکے اینڈرائیڈ فونز کے برابر۔ اس قیمت کو ہضم کرنا تھوڑا مشکل ہے۔ چلیں، جب پاکستان آئے گا تو دیکھیں گے کہ کتنے میں فروخت کیا جاتا ہے۔

ایچ ایم ڈینوکیانوکیا 8110