ٹرمپ انتظامیہ چائنا موبائل کا راستہ روکنے کی کوشش میں

امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ کی انتظامیہ چائنا موبائل کی امریکی ٹیلی کام مارکیٹ میں داخلے کی مخالفت کر رہی ہے اور اس کی وجہ قومی سلامتی کے خدشات بتائے جا رہے ہیں۔

محکمہ تجارت کے ذیلی ادارے نیشنل ٹیلی کمیونی کیشنز اینڈ انفارمیشن ایڈمنسٹریشن کا کہنا ہے کہ اس نے فیڈرل کمیونی کیشنز کمیشن کو تجویز کیا ہے کہ وہ چائنا موبائل کی درخواست رد کردے۔ یہ درخواست 2011ء میں جمع کروائی گئی تھی۔

یہ تجویز ایسے موقع پر سامنے آئی ہے جب امریکا اور چین کے درمیان قومی سلامتی کے امور پر کشیدگی بڑھ رہی ہے۔ دسمبر میں ٹرمپ انتظامیہ نے چین کو ان ممالک میں شمار کیا جو ملکیت دانش (intellectual property) چوری کرنے کے لیے ہیکنگ کرتے ہیں۔ یہ معاملہ 2015ء میں اوباما دور حکومت میں پیش آیا تھا۔ اسی سال اوباما اور چینی صدر شی جن پنگ نے ایک معاہدہ کیا تھا جس نے معاشی فائدے کے لیے ایک دوسرے کے خلاف ہیکنگ پر پابندی لگائی تھی۔

یہ محکمہ تجارت ہی تھا کہ جس نے قومی سلامتی کو لاحق خدشات کی بناء پر فونز بنانے والے چینی ادارے زیڈ ٹی ای پر امریکا میں پابندی عائد کردی تھی۔

واضح رہے کہ چائنا موبائل وہی ادارہ ہے جو پاکستان میں زونگ نامی ٹیلی کام کمپنی چلاتا ہے۔

پابندیچائنا موبائل