بٹ کوائن بنانے والا کون؟ آج بھی ایک راز!

1,236

بٹ کوائن کو ستوشی ناکاموتو نے بنایا، کیا ان کا تعلق جاپان سے تھا؟ شاید ہاں!، شاید نہیں۔ کچھ لوگوں کا کہنا ہے کہ وہ فن لینڈ کے ایک سماجی ماہر ہیں یا چند کے خیال میں اسرائیل کے ایک ریاضی دان۔ کچھ کا کہنا ہے کہ یہ ایپل کے بانی اسٹیو جابس تھے، کچھ اسے سافٹویئر ڈیولپر گیون اینڈرسن کا فرضی نام مانتے ہیں جبکہ چند کی نظر میں اس کے ڈانڈے ٹیسلا کے مالک ایلون مسک سے جا ملتے ہیں لیکن یہ سب انکاری ہیں۔ یہی وجہ ہے کہ ہمیں نہ کبھی ناکاموتو کا کوئی انٹرویو سننے، دیکھنے یا پڑھنے کو ملا اور نہ ہی اس کا کوئی امکان ہے۔

ستوشی ناکاموتو نے 2008ء میں اپنا وہ انقلابی مقالہ جاری کیا تھا جس میں انہوں نے ڈجیٹل کرنسی کی ایک نئی قسم متعارف کروائی تھی جسے کسی سینٹرل بینک کی ضرورت نہیں ہے۔ اس کے نتیجے میں بٹ کوائن تخلیق کیا گیا، جو بہت طاقتور کمپیوٹرز کے ذریعے انٹرنیٹ پر موجودہ کوڈز کو توڑ کر حاصل کیے جانے لگے۔ یہ عمل کرنے والے مائنرز کہلاتے ہیں لیکن جیسے ہی زیر گردش بٹ کوائنز کی تعداد 21 ملین تک پہنچ جائے گی، مزید مائننگ بند ہو جائے گی۔ روایتی کرنسی میں ایسا نہیں ہوتا کہ جہاں جتنی چاہے کرنسی چھاپیں۔

اب ناکاموتو خود تو ارب پتی بننے والے ہیں کیونکہ ان کے پاس 10 ہزار سے زیادہ بٹ کوائنز ہیں، لیکن ساری دنیا کو عجب دھندے پر لگا گئے۔