برما قتل عام، فیس بک پوسٹس ڈیلیٹ اور اکاؤنٹس بلاک کرنے لگا

1,511

برما میں مسلمانوں کے قتل عام کو دنیا کے سامنے لانے والے افراد کا کہنا ہے کہ فیس بک روہنگیا افراد کی نسل کشی کے حوالے سے کی گئی پوسٹس کو حذف کر رہا ہے، بلکہ ان کے اکاؤنٹس بھی معطل کیے جا رہے ہیں۔

روہنگیا برما میں رہنے والی مسلم اقلیت ہے۔ انہیں برما کی فوج اور بدھ شدت پسندوں کی طرف سے بدترین مظالم کا سامنا ہے جو ان کے دیہات کو نذر آتش کر رہے ہیں، مہاجرین کو قتل کر رہے ہیں اور اب تک لاکھوں افراد ہجرت کرنے پر مجبور ہوئے ہیں۔ انسانی حقوق کے عالمی اداروں کے مطابق حالیہ چند ماہ میں ان واقعات میں بہت تیزی سے اضافہ ہوا ہے اور اقوام متحدہ کے ایک عہدیدار کے الفاظ میں یہ "نسل کشی کی بدترین مثال ہے۔”

برما میں اور بیرون ملک مقیم روہنگیا مسلمان اس معاملے کو سوشل میڈیا کے ذریعے دنیا کے سامنے لانے کی کوشش کر رہے ہیں لیکن اب انہیں ایک نئے محاذ کا سامنا ہے کہ سب سے بڑا سوشل میڈیا پلیٹ فارم فیس بک ہی اُن کے خلاف ہو گیا ہے۔

فیس بک کے ایک نمائندے کا کہنا ہے کہ ہم فیس بک کو ایسی جگہ بنانا چاہتے ہیں جب سب ذمہ دارانہ انداز میں شیئرنگ کریں۔ ہم ایک محفوظ اور معقول ماحول فراہم کرنے کے لیے اظہار رائے میں توازن قائم کرنا چاہتے ہیں۔ یہی وجہ ہے کہ ہمارے کمیونٹی معیارات ہیں، جو یہ طے کرتے ہیں کہ کس قسم کی شیئرنگ کی اجازت ہے اور کس قسم کا مواد رپورٹ کیا جاتا ہے اور حذف کردیا جاتا ہے۔ کوئی بھی صارف اگر یہ سمجھتا ہے کہ کوئی کونٹینٹ فیس بک کے معیارات کے خلاف ہے تو وہ ہمیں رپورٹ کر سکتا ہے۔ برما کے معاملے میں ہم بہت احتیاط سے مواد کا جائزہ لے رہے ہیں کہ وہ ہمارے کمیونٹی معیارات کے مطابق ہو۔

ایک ایسے وقت میں جب فیس بک کو صارفین کے ڈیٹا کے لیک ہونے کی وجہ سے امریکا اور دنیا بھر میں سخت تنقید کا سامنا ہے، کئی ایسی خبریں سامنے آئی ہیں جن سے فیس بک کے غیر ذمہ دار ہونے کا تاثر مضبوط ہوتا ہے جیسا کہ ایک ایسے نیٹ ورک کا انکشاف ابھی پچھلے ہفتے ہی ہوا ہے کہ جو یہودیوں سے نفرت کرنے والوں کو ہدف بناکر ان کے لیے اشتہارات پیش کرتا تھا۔ اس سے قبل روس کے ایسے گروپوں کی خبریں سامنے آئیں جو مہاجرین اور تارکین وطن کے خلاف ریلیاں منعقد کرنے کے لیے فیس بک کا استعمال کرتے ہیں۔

برما جیسے ترقی پذیر ملک میں، جہاں بنیادی ڈھانچہ بہت کمزور ہے، فیس بک ایک بہت اہم پلیٹ فارم ہے۔ بلکہ برما میں تو فیس بک ہی انٹرنیٹ ہے اس لیے یہاں پر اکاؤنٹ بند ہونے کو بڑا نقصان سمجھا جاتا ہے۔

This website uses cookies to improve your experience. We'll assume you're ok with this, but you can opt-out if you wish. Accept