سگریٹ کی شکل کا نامعلوم خلائی جسم، سائنسدان پریشان

1,111

برطانوی اخبار گارڈیئن کے مطابق امریکی خلائی تحقیق کے ادارے ناسا نے گزشتہ اکتوبر کو خلاء میں سگریٹ کی شکل کا ایک عجیب وغریب جسم دریافت کیا تھا۔

سائنسدان ابھی تک اس جسم کی نوعیت اور تفصیلات حاصل نہیں کر سکے ہیں تاہم شبہہ ہے کہ یہ ستاروں کے بیچ گردش کرنے والا کوئی آوارہ سیارچہ ہوسکتا ہے اگرچہ اس سے پہلے اسے خلائی یا ایلیئن جہاز سمجھا جا رہا تھا۔

سائنسدانوں کا کہنا ہے کہ یہ عجیب وغریب جسم 400 میٹر لمبا ہے اور زمین اور سورج سے دو گنا فاصلے پر ہے تاہم سائنسدان ابھی تک اس جسم میں سے کوئی مصنوعی سگنل وصول نہیں کر سکے ہیں۔

اس نامعلوم خلائی جسم کا نام "اوموموا” رکھا گیا ہے۔

جمعرات کو سائنسدانوں نے تفصیلات جاری کرتے ہوئے بتایا تھا کہ انہیں ایسے کوئی اشارے نہیں ملے جس سے یہ پتہ چلتا ہو کہ اوموموا زمین کے لیے کسی طرح کا کوئی خطرہ بن سکتا ہے اور ممکنہ طور پر یہ محض خلائی پتھروں کا ایک طویر ٹکڑا ہوسکتا ہے۔

ہارورڈ یونیورسٹی کے خلائی سائنسدانوں کا کہنا ہے کہ وہ اوموموا یا خلاء میں تیرتے کسی دیگر خلائی جسم سے مصنوعی سگنلز کی تلاش جاری رکھیں گے۔