دنیا کا سب سے بڑا ARM سپر کمپیوٹر تیار

2,501

زیادہ تر سپر کمپیوٹرز کی توجہ خالص پروسیسنگ رفتار پر ہوتی ہے۔ "سمٹ” پر ہی نظر ڈال لیں جو اب دنیا کا طاقتور ترین سپر کمپیوٹر ہے کہ جس میں 22 کور آئی بی ایم پاور9 پروسیسرز کی تعداد 9 ہزار ہے جبکہ این وِڈیا ٹیسلا وی100 جی پی یوز بھی 27 ہزار سے زیادہ ہیں۔ لیکن پروسیسنگ کارکردگی ہی سب کچھ نہیں۔ گزشتہ سال ہیولیٹ پیکارڈ انٹرپرائز (ایچ پی ای) نے سپر کمپیوٹر کے لیے اپنے پروٹوٹائپ ‘دی مشین’ کا اعلان کیا تھا جو برق رفتار میموری رکھتا تھا۔

اب ایچ پی ای اس تصوّر کو ایک حقیقی پروڈکٹ "ایسٹرا” میں تبدیل کر رہا ہے، جو ہے دنیا کا سب سے بڑا اے آر ایم-بیسڈ سپر کمپیوٹر۔ امریکی محکمہ توانائی کے تعاون سے تیار کیا گیا یہ سپر کمپیوٹر سینڈیا نیشنل لیبارٹری میں نیوکلیئر ریسرچ کے لیے نئے تجرباتی پلیٹ فارم کے طور پر استعمال ہوگا۔ کیونکہ اس میں کیویئم تھنڈر ایکس 2 اے آر ایم پروسیسرز ہیں، اس لیے یہ کہیں زیادہ بجلی بچت کرے گا اور روایتی x86 سسٹمز کے مقابلے میں اس میں کہیں زیادہ ہارڈویئر بھی نصب ہو سکتا ہے۔ اے آر ایم چپ سیٹ x86 سی پی یوز کے مقابلے میں 33 گنا تیز میموری رفتار بھی دیتے ہیں۔

ایسٹرا ایچ پی ای کے اپالو سسٹم پر بنایا گیا ہے، اور یہ ایک لاکھ 45 ہزار کورز سے زیادہ پر مبنی ہیں جو 2592 ڈوئل پروسیسر سرورز میں نصب ہیں۔ 28 کور تھنڈر X2 پروسیسرز جو ایچ پی ای استعمال کر رہا ہے آٹھ میموری چینلز بھی دیتا ہے جو عام x86 چپس میں چھ ہوتی ہیں۔ ایچ پی ای کا دعوی ہے کہ ایسٹرا 2.3 پی فلاپس کی کارکردگی دکھا سکتا ہے جو اسے دنیا کے 100 تیز ترین سپر کمپیوٹرز میں لا سکتا ہے۔

This website uses cookies to improve your experience. We'll assume you're ok with this, but you can opt-out if you wish. Accept