ایلون مسک نے اسپیس ایکس اور ٹیسلا کے فیس بک پیجز ڈیلیٹ کروا دیے

1,180

ٹوئٹر پر گفتگو کے دوران اسپیس ایکس اور ٹیسلا کے مالک ایلون مسک نے چیلنج کیے جانے پر اپنے ان دونوں بڑے اداروں کے فیس بک پیجز ڈیلیٹ کر وادیے ہیں۔ دونوں پیجز پر 26 لاکھ لائیکس موجود تھے۔

مسک نے گزشتہ صبح واٹس ایپ کے بانی برائن ایکٹن کے ایک ٹوئٹ کے جواب میں پر ایک ٹوئٹ میں کہا کہ "فیس بک کیا ہے؟”۔ جس کے بعد ایک صارف نے مسک کو طعنہ دیا کہ "اگر مرد ہو تو” اسپیس ایکس کا فیس بک پیج ڈیلیٹ کردو۔ مسک نے کہا کہ انہیں تو یہ بھی معلوم نہیں کہ ایسا کوئی پیج وجود بھی رکھتا ہے، لیکن وہ اس معاملے پر دیکھتے ہیں۔ بہرحال، مردانگی کا طعنہ کام آ گیا اور اسپیس ایکس کا فیس بک پیج تمام ہوا۔

اس گفتگو کے دوران مسک نے مزید کہا کہ انہوں نے پہلی بار اسپیس ایکس کا فیس بک پیج دیکھا ہے اور یہ بہت جلد ختم ہو جائے گا۔ کسی نے ٹیسلا کے فیس بک پیج کی طرف بھی توجہ دلائی تو مسک نے کہا "بہت ہی فضول لگ رہا ہے۔” ان دونوں کے علاوہ ٹیسلا کی ملکیت سولر سٹی کا فیس بک پیج بھی ختم ہو چکا ہے۔

لیکن یاد رکھیں کہ انسٹاگرام پر اب بھی اسپیس ایکس اور ٹیسلا کے اکاؤنٹس موجود ہیں، جو فیس بک ہی کی ملکیت ہے۔ اس لیے اب ایک اور مردانگی کا طعنہ دیا جائے تو اس کا بھی خاتمہ ہو جائے۔

تفنّن برطرف، ایلون مسک کی جانب سے فیس بک کی ایسی تذلیل کے بعد #deletefacebook کی مہم کو ایک نئی تحریک ملی ہے۔ کیمبرج اینالٹکا کے قضیے کے سامنے آنے کے بعد فیس بک مالی لحاظ سے بھی زبردست دباؤ میں ہے۔