انجینئرز نے دنیا کا سب سے چھوٹا کمپیوٹر تیار کر لیا

2,236

گزشتہ دنوں آپ نے معروف چپ ساز ادارے آئی بی ایم کی جانب سے دنیا کا سب سے چھوٹا کمپیوٹر تیار کیے جانے کی خبر تو پڑھی ہی ہو گی۔ جو کہ نمک کے دانے کے برابر یعنی 1×1 ملی میٹر جسامت کا حامل تھا۔ لیکن اب خبر یہ ہے کہ یونیورسٹی آف مشی گن کے ماہرین نے اس سے بھی کم جسامت کا کمپیوٹر تیار کر لیا ہے۔

ٹیکنالوجی بلاگ سی نیٹ میں شائع ہونے والی خبر کے مطابق مشی گن یونیورسٹی کے انجینئرز نے دنیا کا سب سے چھوٹا کمپیوٹر تیار کرنے کا دعویٰ کیا ہے جس کی جسامت لمبائی اور چوڑائی میں صرف صفر اعشاریہ تین 0.3 ملی میٹر ہے۔ گویا یہ آئی بی ایم کے تیار کردہ کمپیوٹر سے تین گنا کم جسامت کا حامل ہے۔

اس کمپیوٹر کو تیار کرنے والے انجینئرز کا دعویٰ ہے کہ یہ صرف جسامت میں ہی کم نہیں بلکہ کارکردگی میں بھی آئی بی ایم کمپیوٹر سے کئی گنا بہتر ہے۔ کیونکہ آئی بی ایم کا تیار کردہ کمپیوٹر صرف اپنی شناخت کے لیے کوڈ کو بھیج سکتا ہے۔ جبکہ یہ کمپیوٹر اپنے اردگرد کے ماحول کو محسوس کرنے کی صلاحیت بھی رکھتا ہے۔

ماہرین کے مطابق یہ کم جسامت کمپیوٹر مکمل استعداد کار کا حامل نہیں ہے۔ البتہ اس کی مدد سے مخصوص عوامل سرانجام دیے جا سکتے ہیں۔ مثلاً اسے طبی شعبہ میں استعمال کیا جا سکتا ہے۔ اسے آنکھ کے اندر دباؤ کو محسوس کرنے کے لیے استعمال کیا جا سکتا ہے۔ جبکہ سرطان کی رسولی اور عام بافتوں کے درمیان درجہ حرارت میں تبدیلی جیسے عوامل کی شناخت کر کے تھیراپی اور علاج کو بہتر بنایا جا سکتا ہے۔ اس کے علاوہ یہ مختصر جسامت کے کمپیوٹرز مستقبل کے مختصر آلات کے لیے بہتر امیدوار کے طور پر سامنے آ سکتے ہیں۔