فیس بک نے 200 ایپس معطل کردیں

2,716

فیس بک نے 200 ایسی ایپس کو معطل کردیا ہے جو صارفین کا ڈیٹا جمع کرتی تھیں۔ کیمبرج اینالیٹکا اسکینڈل کے سامنے آنے کے بعد یہ فیس بک کی ایک اہم کارروائی ہے۔ یہ ایک پرائیویسی اسکینڈل تھا جس میں کروڑوں فیس بک صارفین کا ڈیٹا اکٹھا کرکے استعمال کیا گیا تھا۔ اب دنیا کا سوشل نیٹ ورک اب ایسی ایپس کی تلاش کر رہا ہے جو صارفین کے ڈیٹا کا غلط استعمال کررہی ہیں اور پھر صارفین کو خبردار کرے گا کہ یہ ایپس آپ کی ذاتی معلومات حاصل کرکے استعمال کر سکتی ہیں۔

برطانیہ کی انتخابات میں مشاورت دینے والی کمپنی کیمبرج اینالیٹکا نے ایک فیس بک ایپ "This is your Digital Life” سے 87 ملین صارفین کا ڈیٹا جمع کیا تھا۔ یہ معلومات سامنے آنے پر بڑا ہنگامہ ہوا اور نہ صرف فیس بک کو اسٹاک مارکیٹ میں زبردست نقصان کا سامنا کرنا پڑا بلکہ اس کے مالک مارک زکربرگ کے کانگریس کے روبرو پیش ہوکر صفائی بھی دینا پڑی۔

سوموار کو فیس بک نے اعلان کیا کہ اس کی تحقیقات اپنے عروج پر پہنچ چکی ہیں۔ اس وقت وہ ایسی ہزاروں ایپس کا معائنہ کر رہا ہے جو فیس بک سے منسلک ہیں۔ ابتدائی مرحلے میں 200 معطل کی گئی ایپس کا تجزیہ کیا جائے گا کہ آیا وہ حاصل کردہ ڈیٹا کا غلط استعمال کر رہی ہیں یا نہیں؟ ایسا ہونے کی صورت میں ایپ پر پابندی لگا دی جائے گی۔ اس دوسرے مرحلے کی تکمیل فیس بک اپنے صارفین کو آگاہ کرے گا کہ ان کا ذاتی ڈیٹا کسی کی دسترس میں ہے۔

فیس بک کے مالک مارک زکربرگ نے کہا تھا کہ ان کے سوشل میڈیا نیٹ ورک سے غلطیاں ہوئی ہیں اور اب وہ کیمبرج اینالیٹکا اسکینڈل جیسی صورت حال سے بچنے کے لیے قدم اٹھائیں گے۔