فیس بک اسکینڈل: پاکستان کے حوالے سے بڑی خبر

2,858

کیمرج اینالاٹیکا اسکینڈل کے بعد فیس بک اور اس کے بانی مارک زکر برگ مسلسل شدید تنقید کی زد میں ہیں۔ اس سلسلے میں فیس بک کی ساکھ کو بہتر بنانے اور صارفین کی معلومات کا تحفظ یقینی بنانے کے لیے مارک زکر برگ نے کئی اقدامات کا اعلان کیا ہے۔ حال ہی میں فیس بک بانی نے ایک ویڈیو کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے یہ عندیہ دیا ہے کہ فیس بک رواں سال پاکستان میں ہونے والے انتخابات کے حوالے سے خصوصی اقدامات کرے گا۔

واضح رہے کہ کیمرج اینالاٹیکا اسکینڈل میں یہ انکشاف ہوا تھا کہ برطانوی فرم نے فیس بک کے امریکی صارفین کی معلومات اور ان کے رحجانات پر مشتمل ڈیٹا کو امریکہ میں ہونے والے صدارتی انتخابات پر اثر انداز ہونے کے لیے استعمال کیا تھا۔ اسکینڈل سامنے آنے کے بعد دنیا بھر میں حکومتی اور عوامی سطح پر فیس بک پالیسیوں پر تحفظات کا اظہار کیا گیا تھا۔

زکربرگ نے کانفرنس شرکاء کو بتایا ہے کہ رواں سال امریکہ میں وسط مدتی، انڈیا کی کچھ ریاستوں میں جبکہ پاکستان میں بڑے انتخابات ہو رہے ہیں۔ ان انتخابات کے دوران حکومت، اداروں اور تیسری پارٹی کی کمپنیوں کی جانب سے فیس بک صارفین کے ڈیٹا میں مداخلت کو ختم کرنے کے لیے مختلف اقدامات کیے جا رہے ہیں۔ جن میں فیس بک نے ڈیٹا تحفظ کے لیے 20 ہزار ملازمین بھی بھرتی کیے ہیں۔ جبکہ اس سلسلے میں مصنوعی ذہانت پر مشتمل ٹولز کا استعمال بھی کیا جائے گا۔

زکر برگ کا کہنا تھا کہ انتخابات کے دوران جعلی اکاؤنٹس کے ذریعے جھوٹی خبریں پھیلانے والوں کے خلاف بھی کریک ڈاؤن کیا جائے گا۔ جبکہ ایسے میڈیا ادارے جو بظاہر آزاد اور غیر جانبدار معلوم ہوتے ہیں لیکن پس پردہ انہیں حکومتی ادارے کنٹرول کرتے ہیں۔ ان کے خلاف ایکشن لیا جائے گا اور ان کے پیجز کو بند کر دیا جائے گا جیسا کہ حال ہی میں روسی انتخابات کے دوران کیا گیا ہے۔

This website uses cookies to improve your experience. We'll assume you're ok with this, but you can opt-out if you wish. Accept