گوگل "ٹاک ٹو بُکس” کی رونمائی

989

گوگل نے آج Talk to Books کی رونمائی کی ہے، جو ایک تخلیقی ٹول ہے کہ جو صارفین کے سوالات پر کتب اور متعلقہ اقتباسات پیش کر سکتا ہے۔ مصنوعی ذہانت سے لیس اس ٹول کی وجہ سے کی ورڈز نہیں بلکہ جملوں کی صورت میں پیش کرکے بہتر نتائج حاصل کیے جا سکتے ہیں۔

ڈیولپرز بلاگ پر پیش کردہ تحریر میں گوگل نے ٹاک ٹو بکس کو "کتابوں کو تلاش کرنے کا ایک مکمل طور پر نیا طریقہ قرار دیا ہے، جو مصنفین یا موضوعات کے بجائے جملوں کی سطح پر کام کرتا ہے۔”

یہ تجربہ جدید مشین لرننگ کو ظاہر کرتا ہے جو فطری انداز کے مطابق کمپیوٹرز کے لیے رابطہ کرنا ممکن بناتا ہے۔ اس انجن کو آپ مکمل جملے دیں اور یہ "ایک لاکھ زیادہ کتب سے پورے جملے تلاش کرے گا اور آپ کے اِن پٹ کی بنیاد پر جواب دے گا۔” یعنی اگر آپ کوئی سوال پوچھتے ہیں تو یہ کوشش کرے گا کہ ایک کتاب میں سے کوئی اقتباس نکال لائے۔

گوگل کہتا ہے کہ "ٹاک ٹو بکس مخصوص جوابات کی تلاش کے لیے زیادہ تخلیقی ٹول ہے۔ البتہ اس سے طبی مشورے لینے یا دیگر کاموں کے لیے استعمال کرنے سے منع کیا ہے۔

بہرحال، اسے دیکھ کر یہ تصور کرنا آسان ہو جاتا ہے کہ گوگل اسسٹنٹ جیسی مصنوعات تیار کرنے میں ٹیکنالوجی کس طرح کام کرتی ہے۔