جرائم پیشہ افراد کی بھرتی، اوبر کو جرمانہ

File illustration picture showing the logo of car-sharing service app Uber on a smartphone next to the picture of an official German taxi sign in Frankfurt, September 15, 2014. A Frankfurt court earlier this month instituted a temporary injunction against Uber from offering car-sharing services across Germany. San Francisco-based Uber, which allows users to summon taxi-like services on their smartphones, offers two main services, Uber, its classic low-cost, limousine pick-up service, and Uberpop, a newer ride-sharing service, which connects private drivers to passengers - an established practice in Germany that nonetheless operates in a legal grey area of rules governing commercial transportation. REUTERS/Kai Pfaffenbach/Files (GERMANY - Tags: BUSINESS EMPLOYMENT CRIME LAW TRANSPORT)
907

امریکی ریاست کولراڈو نے اوبر Uber پر مجرمانہ ریکارڈ رکھنے والے ڈرائیورز کو ملازمت پر رکھنے کی پاداش میں 8.9 ملین ڈالر کا جرمانہ عائد کر دیا ہے۔

ریاستی حکومت کے مطابق اوبر نے ایسے لوگوں کو بغیر تحقیق کے بھرتی کیا جن کے مجرمانہ ریکارڈ تھے یا جن پر نشے کی حالت میں یا غیر ذمہ دارانہ ڈرائیونگ کی پاداشن میں ماضی میں جرمانے عائد ہوچکے تھے یا وہ سزا یافتہ تھے جس کی وجہ سے لوگوں کی سلامتی کو خطرات لاحق ہیں۔

ریاستی اہلکار ڈگ ڈین Doug Dean کے مطابق ریاست نے اوبر پر یہ جرمانہ اس لیے عائد کیا ہے کہ اوبر نے ڈرائیور بھرتی کرتے وقت قانون کے مطابق ان کے مجرمانہ ریکارڈ چیک کرنے کی زحمت نہیں کی اور انہیں ڈرائیونگ کرنے کی اجازت دے دی۔

اوبر کا کہنا ہے کہ انہیں بھرتی کرنے کے عمل میں نقائص سے آگاہ کیا گیا ہے جو ریاستی قوانین سے مطابقت نہیں رکھتے تاہم اس کا اثر بہت کم ڈرائیورز پر پڑا ہے اور کمپنی اس سلسلے میں فوری اقدامات کر رہی ہے۔