کہیں آپ بھی فیس بک اسکینڈل کے متاثرین میں سے تو نہیں؟

4,172

فیس بک کے حالیہ سامنے آنے والے کیمرج اینالاٹیکا اسکینڈل کے بارے میں یقیناً آپ کو معلوم ہو گا۔ اسے فیس بک کی ہی نہیں بلکہ پورے سوشل میڈیا کی تاریخ کا سب سے بڑا اسکینڈل قرار دیا جاتا ہے۔ کمپیوٹنگ پر اس اسکینڈل کے سلسلے میں آپ کو تازہ ترین پیش رفت سے آگاہ کیا جاتا رہا ہے۔

بہت سے پاکستانیوں کی اس اسکینڈل سے دلچسپی نہ ہونے کے برابر ہے۔ کیونکہ ہمارے ہاں ابھی ذاتی معلومات کے تحفظ کے حوالے سے اتنی آگہی نہیں ہے۔ ویسے بھی عام پاکستانی کو اس بات سے غرض نہیں ہے کہ اس کے ڈیٹا کو کس حد تک غیر قانونی طور پر استعمال کیا جا سکتا ہے۔ اور آنے والے وقت میں اس کی وجہ سے کتنی مشکلات کھڑی ہو سکتی ہیں۔

اس مضمون میں ہم آپ کو بتائیں گے کہ کس طرح آپ یہ جان سکتے ہیں کہ کہیں فیس بک پر موجود آپ کی ذاتی معلومات بھی کیمرج اینالاٹیکا اسکینڈل کی نذر تو نہیں ہوئیں تھیں؟ نیز آئندہ کے لیے کیسے آپ اپنے فیس بک کھاتے کو محفوظ بنا سکتے ہیں۔ پہلے ایک مختصر اور طائرانہ نظر۔۔۔ کہ کیمرج اینالاٹیکا اسکینڈل دراصل کیا اور کس نوعیت کا تھا۔

کیمرج اینالاٹیکا اسکینڈل کیا ہے؟

برطانیہ کی کیمرج اینالاٹیکا نامی فرم کے حوالے سے یہ انکشاف ہوا تھا کہ اس نے اپنی ایک ایپ کے ذریعے فیس بک کے آٹھ کروڑ سے زائد صارفین کی معلومات کو چرا کر اسے امریکی انتخابات سمیت مختلف مواقع پر غیر قانونی طور پر استعمال کیا تھا۔

کیمرج اینالاٹیکا نے نا تو کسی کھاتے کا پاس ورڈ کریک کیا تھا نا ہی جعلی کھاتے بنانے سمیت کوئی تکنیکی طور پر غیر قانونی طور پر کام کیا تھا۔ بلکہ اس فرم نے فیس بک صارفین کا اعتماد حاصل کرتے ہوئے اپنی بنائی ہوئی "یہ میری اعدادی زندگی ہے” This is my digital Life نامی فیس بک ایپ کو ان کے کھاتوں میں نصب (انسٹال) کیا تھا۔

اس تنصیب کے دوران ایپ نے نا صرف متعلقہ صارف کی معلومات بلکہ اس صارف کے دوستوں کے کھاتوں تک رسائی کے حقوق بھی حاصل کیے۔ جس کا مطلب یہ کہ اگر آپ نے یہ ایپ اپنے کھاتے میں نصب نہیں بھی کی اور آپ کے فیس بک دوستوں میں سے کسی ایک نے بھی کی تھی تب بھی آپ کی تمام ذاتی معلومات بالواسطہ طور پر آپ کے دوست کے ذریعے کیمرج اینالاٹیکا فرم تک پہنچی ہوں گی۔

اسی طریقہ کار سے فرم نے کروڑوں صارفین کا ڈیٹا حاصل کیا۔ مزید تفصیلات آپ کمپیوٹنگ کے گزشتہ مضامین میں پڑھ سکتے ہیں۔

اب آتے ہیں اس جانب کہ یہ کیسے جانا جا سکتا ہے کہ آپ بھی متاثرین میں شامل ہیں کہ نہیں؟ اس کے لیے طریقہ کار درج ذیل ہے۔

کیا آپ بھی اسکینڈل کے متاثرین میں سے ہیں؟

فیس بک کا کہنا ہے کہ اس کے پاس ان تمام صارفین کی فہرست پر مشتمل لاگ موجود ہے جنہوں نے "یہ میری اعدادی زندگی ہے” نامی ایپ استعمال کی ہے۔ آپ اس لاگ کے ذریعے یہ دیکھ سکتے ہیں کہ کہیں آپ بھی کیمرج اینالاٹیکا اسکینڈل کے براہ راست یا بلواسطہ متاثرین میں شامل تو نہیں۔
یہ جاننے کے لیے آپ درج ذیل لنک کو کاپی کریں اور اپنے ویب براؤزر میں چلائیں۔ نتیجتاً ظاہر ہونے والی ونڈو میں اپنے فیس بک کھاتے میں لاگ ان ہوں۔

https://www.facebook.com/help/1873665312923476

اگر آپ کو نیچے دیے گیے اسکرین شاٹ کے مطابق پیغام موصول ہوتا ہے تو مبارک ہو آپ فیس بک کی تاریخ کے بڑے اسکینڈل سے بال بال بچ گئے ہیں۔

مزید کیا کیا جائے؟

اگر آپ کا نام بدقسمتی سے متاثرین میں شامل ہے تو بھی فی الحال آپ کچھ نہیں کر سکتے۔ کیونکہ پانی سر سے گزر چکا ہے۔ تاہم آئندہ کی پیش بندی کے لیے یہ ضروری ہے کہ آپ اپنی معلومات کے تحفظ کو یقینی بنائیں۔

اس مقصد کے لیے آپ درج ذیل لنک پر جا کر یہ دیکھ سکتے ہیں کہ آپ کے کھاتے میں کون کون سی ایپس نصب ہیں۔ اور انہیں کس قسم کے اختیارات حاصل ہیں۔ آپ ان اختیارات میں تبدیلی کرتے ہوئے اسے مکمل طور پر بند یا مشروط اجازت دے سکتے ہیں۔

https://www.facebook.com/app_settings_list

آپ کو یہ کام ضرور کرنا چاہیے تا کہ آئندہ کوئی آپ کی ذاتی معلومات سے ناجائز فائدہ نا اٹھا سکے۔