کپڑے کی بیٹری جو بیکٹیریا سے بجلی پیدا کرتی ہے

828

بنگھیمٹن یونیورسٹی Binghamton University کے محققین کی ایک ٹیم مکمل طور پر کپڑے سے بنی ایک ایسی بیٹری بنانے میں کامیاب ہوگئی ہے جسے مستقبلِ قریب میں "ویئر ایبل” الیکٹرانک ڈیوائسس میں استعمال کیا جاسکے گا۔

یونیورسٹی کی ویب سائٹ کے مطابق روایتی بیٹریوں کے برخلاف یہ بیٹری بیکٹریا سے توانائی حاصل کرتی ہے۔

لوگوں کے روز مرہ استعمال میں بیٹری سے چلنے والی چیزوں کے استعمال میں اضافے کے تناظر میں ماہرین اس پیش رفت کو سنجیدگی سے لے رہے ہیں۔

الیکٹریکل انجینئر اور اس بیٹری کے موجد Seokheun Choi کا کہنا ہے کہ یہ بیٹری نہ صرف ماحول دوست ہے بلکہ یہ استعمال میں آسان بھی ہے، ان کا مزید کہنا تھا کہ انسانی جسم پر کثیر تعداد میں بیکٹیریا پائے جاتے ہیں جس سے فائدہ اٹھایا گیا ہے۔

بیکٹیریا سے توانائی کشید کرنے والی چوئی کی یہ بیٹری مائکروبیئل فیول سیلز microbial fuel cells پر انحصار کرتی ہے، اس قسم کے سیلز "آکسیڈیشن ری ایکشن” پیدا کرنے کے لیے بیکٹیریا کا استعمال کرتے ہیں اور مالیکیولز کے ما بین الیکٹرانز کا تبادلہ کر کے بجلی پیدا کرتے ہیں۔

اس تحقیق کے نتائج "ایڈوانسڈ اینرجی مٹیریلز” میں شائع ہوئے ہیں۔