مارک زکربرگ کی سکیورٹی پر 7.3 ملین ڈالرز لگا دیے گئے

1,187

جب آپ دنیا کے سب سے بڑے سوشل نیٹ ورک کے مالک ہوں تو بلاشبہ اپنی سکیورٹی اولین ترجیح ہوگی۔ فیس بک نے کہا ہے کہ وہ اپنے سی ای او مارک زکربرگ کی ذاتی سکیورٹی پر گزشتہ سال 7.3 ملین ڈالرز خرچ کر چکا ہے۔ یہ 2016ء کے 4.8 ملین ڈالرز سے لگ بھگ دوگنی رقم ہے۔

ادارے کا کہنا ہے کہ اس نے نجی ہوائی جہازوں کے استعمال 1.5 ملین سے زیادہ خرچ کیے، جو پچھلے سال کے 8 لاکھ 70 ہزار ڈالرز سے کہیں زیادہ ہیں۔ اس میں چارٹر کمپنیوں کو ادا کی گئی رقم کے ساتھ پسینجر فیس، ایندھن، عملہ اور دوران سفر کھانے پینے کے اخراجات شامل ہیں۔

سکیورٹی اور فضائی سفر کے اخراجات میں اضافے کی ایک اہم وجہ یہ بھی ہے کہ زکربرگ نے 2017ء میں امریکا کی ہر اس ریاست کا سفر کرنے کا ارادہ کیا تھا جہاں وہ پہلے کبھی نہیں گئے۔ ان ریاستوں کی کل تعداد 30 تھی۔ یہ دورہ زکربرگ کے سالانہ چیلنجز میں سے ایک تھا، بلکہ ان کا نئے سال کا عہد تھا۔ گزشتہ سے پیوستہ سالوں میں انہوں نے چینی زبان سیکھنے، اپنے گھر کے لیے ایک مصنوعی ذہانت سے لیس ڈجیٹل اسسٹنٹ بنانے اور صرف گوشت کھانے جیسے انوکھے عہد کیے تھے۔

فیس بک ترجمان کا کہنا ہے کہ فیس بک بورڈ آف ڈائریکٹرز کا ماننا ہے کہ مارک کی ذاتی سکیورٹی پر اتنی بڑی سرمایہ کاری بالکل حق بجانب ہے۔ وہ فیس بک کی مستقبل کی کامیابی کے لیے ایک اہم شخصیت ہیں اور بانی اور سی ای او کی حیثیت سے اہمیت رکھتے ہیں۔

ویسے آپ کو ایک دلچسپ بات بتاتے ہیں مارک زکربرگ فیس بک سے سالانہ صرف 1 ڈالر لیتے ہیں، بالکل ایپل کے اسٹیو جابس کی طرح البتہ اخراجات دیکھیں 8.9 ملین ڈالرز، جس میں سکیورٹی اور سفری اخراجات شامل ہیں۔ لیکن تکنیکی طور پر صرف 1 ڈالر کمانے کا ہرگز یہ مطلب نہیں کہ وہ غریب ہیں۔ وہ فیس بک اسٹاک کے 401 ملین سے زیادہ شیئرز رکھتے ہیں جن کی کل مالیت اس وقت 6.6 ارب ڈالرز ہے۔ یعنی وہ اس وقت دنیا کے پانچویں امیر ترین فرد ہیں۔