ناسا اور گوگل نے ہمارے نظامِ شمسی کا جڑوا دریافت کر لیا

648

ناسا نے جمعہ کو اعلان کیا ہے کہ اس نے گوگل کے تعاون سے 8 سیاروں پر مشتمل اور ہمارے نظامِ شمسی سے مشابہ ایک نظامِ شمسی دریافت کر لیا ہے۔

یہ دریافت خلائی ٹیلی سکوپ کیپلر کی مدد سے کی گئی ہے اسی لیے اس نئے نظامِ شمسی کا نام کیپلر 90 رکھا گیا ہے جبکہ اس نظام شمسی کے تیسرے سیارے کا نام کیپلر 90 آئی رکھا گیا ہے۔

خیال رہے کہ ہمارے نظامِ شمسی کے سیاروں کی ترتیب میں زمین تیسرے نمبر پر آتی ہے تاہم دریافت شدہ نظامِ شمسی میں کیپلر 90 آئی اپنے سیارے کے گرد 14.4 دنوں میں ایک پورا چکر مکمل کرتا ہے جبکہ اس کی سطح کا درجہ حرارت 425 ڈگری ہے۔

کیپلر 90 کا ستارہ ہمارے ستارے سے بڑا اور زیادہ گرم ہے اور 2545 نوری سال کے فاصلے پر واقع ہے تاہم اس کے گرد چکر لگانے والا نظام ہمارے نظامِ شمسی سے مشابہ ہے۔

یہ ایک بڑی دریافت اس لیے بھی ہے کیونکہ سائنسدانوں کو کیپلر-90 کے گرد گھومتے صرف 6 سیاروں کا پتہ تھا تاہم گوگل کی مصنوعی ذہانت کی ٹیکنالوجی نے مزید دو سیارے دریافت کرنے میں مدد کی جس سے ہمارے نظامِ شمسی کی طرح اس نظامِ شمسی کے سیاروں کی تعداد بھی 8 آٹھ ہوگئی۔