فون کو صاف رکھیں، گوگل کی مصنوعی ذہانت سے

2,258

پاکستان میں 3جی اور 4جی کے آنے کے بعد ہر سال لاکھوں ایسے افراد آن لائن آ رہے ہیں جنہوں نے پہلی بار انٹرنیٹ کا رخ کیا ہے۔ یہ نوآموز صارف دوستوں اور اہل خانہ سے رابطے اور شیئرنگ کے نئے طریقے ڈھونڈ رہے ہیں اور ان کی پہلی آماجگاہ ہوتی ہے فیس بک اور واٹس ایپ۔ عام طور پر ایسے صارفین کی صبح کا آغاز واٹس ایپ پر سلام کے ساتھ ہوتا ہے، ایک خوبصورت تصویر پر لکھا گیا کہ سلام صبح ایک نئے مسئلے کا آغاز بھی ہے۔

ایک ایسے ملک میں جہاں ایک اچھا اسمارٹ فون خریدنا ہر کسی کے بس کی بات نہیں، وہاں عام سے اسمارٹ فون کی اسٹوریج ہی بھلا کتنی ہوگی کہ وہ اتنے زیادہ سلام برداشت کر سکے؟ واٹس ایپ کی فائل کمپریس ٹیکنالوجی ہونے کے باوجود فون کی اسٹوریج جلد بھر جاتی ہے اور اگر صارف کئی گروپوں میں بھی شامل ہے تو پھر اللہ ہی حافظ ہے۔

تھوڑی بہت تکنیکی معلومات رکھنے والے صارف تو گروپس کو mute کر دیتے ہیں، فائلوں کی آٹو میٹک ڈاؤنلوڈنگ بھی بند کر دیتے ہیں لیکن ایسے بہت سے عام صارفین ہیں جو اتنی "گہرائی” میں نہیں جا پاتے اور یہی وجہ ہے کہ پریشان ہو جاتے ہیں۔

ایسے ہی صارفین کے لیے گوگل لایا ہے "فائلز گو"، جو ایک اسٹوریج مینیجر ہے۔ یہ ڈیوائس میں موجود ایپس پر نظر رکھتا ہے اور انٹرنل اسٹوریج پر بھی اور تجویز کرتا ہے کہ کون سی فائلیں ایسی ہیں جنہیں ڈیلیٹ کر دینا چاہیے۔

ایک اندازے کے مطابق پاکستان میں ہر تین میں سے ایک اسمارٹ فون ایسا ہے جس کی اسٹوریج اسپیس روزانہ ختم ہو جاتی ہے۔ گوگل کی مشین لرننگ صلاحیتوں کو استعمال کرتے ہوئے صارف صبح کے پہلے سلام سے لے کر دیگر کئی غیر ضروری تصاویر کو ڈیلیٹ کر سکتے ہیں، جو اسٹوریج پر بوجھ ڈالتی ہیں اور یوں اپنے فون کو صاف رکھ سکتے ہیں۔ یوں فائلز گو آپ کو باآسانی فائلیں وصول اور ارسال کرنے کا موقع دیتا ہے۔ اگر آپ دیکھنا چاہتے ہیں کہ فائلز گو کیا کچھ کر سکتا ہے؟ تو ابھی پلے اسٹور پر جائیں اور اس ایپ کو انسٹال کرکے استعمال کریں اور بتائیں آپ نے اسے کیسا پایا؟