ایٹمی سائنسدان سپرکمپیوٹر سے کرپٹو کرنسی مائننگ کرتے پکڑے گئے

1,969

برطانوی خبر رساں ادارے بی بی سی کی ایک رپورٹ کے مطابق روس کے سیکیورٹی اداروں نے نیوکلیائی پروگرام سے منسلک کچھ سائنسدانوں کو روسی سپر کمپیوٹر سے غیر قانونی طور پر کرپٹو کرنسی کی کان کنی کرنے کے الزام میں گرفتار کیا ہے۔

خبر کے مطابق یہ سائنسدان روس کے انتہائی خفیہ ادارے "وفاقی نیوکلیائی مرکز” سے منسلک تھے۔ اسی مرکز کے زیرنگرانی ایک سپر کمپیوٹر روسی قصبے سروو میں قائم کیا گیا ہے۔ 


یہ سپر کمپیوٹر ایک سیکنڈ میں ایک پیٹا فلاپس تک کے امور سر انجام دے سکتا ہے۔ سادہ الفاظ میں یہ ایک سیکنڈ میں ایک ہزار کھرب حسابی سوال حل کر سکتا ہے۔ اور اسی بنا پر روس کا سب سے طاقتور سپر کمپیوٹر مانا جاتا ہے جسے مبینہ طور پر ان گرفتار کیے گئے سائنسدانوں نے آن لائن کرپٹو کرنسی کی کان کنی کے لیے استعمال کرنے کی کوشش کی۔


قارئین یہ جانتے ہوں گے کہ آن لائن کرنسی کی کان کنی بہت ہی پچیدہ عمل ہے جس میں کان کنی کرنے والا کرنسی کے لین دین کے متعلق حسابی امور کو حل کرنے کے لیے اپنے وسائل (پراسیسر وغیرہ) فراہم کرتا ہے۔ جس کے نتیجے میں اسے کرنسی کی کچھ مالیت بِٹ کوائن یا کسی اور آن لائن کرپٹو کرنسی کی صورت میں ادا کی جاتی ہے۔

لیکن ان امور کو بڑے پیمانے پر حل کرنے کے لیے بے پناہ کمپیوٹنگ اور برقی طاقت چاہیے۔ اسی حوالے سے گزشتہ دنوں ایک خبر آئی تھی کہ آن لائن کرنسی کی کان کنی کے لیے ایک بڑی کاروباری شخصیت نے باقاعدہ دو پاور پلانٹ خرید لیے تھے۔


آن لائن کرنسیوں کی قیمت میں بے پناہ اضافے کی وجہ سے ان کی کان کنی کے لیے درکار وسائل کی اہمیت بڑھتی جا رہی ہے۔ اکثر یہ دیکھا گیا ہے کہ کسی فرد یا ادارے کی جانب سے انٹرنیٹ پر عام لوگوں کے کمپیوٹرز کو بتائےبغیر خفیہ طور پر کان کنی کے لیے استعمال کیا جاتا ہے۔ لیکن اتنے بڑے پیمانے پر غیر قانونی استعمال کا یہ پہلا واقعہ ہے۔


روسی خبر رساں ایجنسی کے مطابق سروو میں موجود روسی سپر کمپیوٹر پر نیٹورک استعمال کے حوالے سے ٹریکرز لگائے گئے تھے۔ اس لیے جونہی ایٹمی سائنسدانوں نے اس کا استعمال کان کنی کے لیے کرنا چاہا۔۔۔ سیکیورٹی پر موجود ماہرین خبردار ہو گئے۔ اور انہیں گرفتار کر لیا گیا۔