اسمارٹ واچ جو چلے آپ کے جسم کی حرارت سے

937

میٹرکس انڈسٹریز نے 2016ء میں پاور واچ جاری کی تھی جس کے ساتھ دعویٰ کیا گیا تھا کہ خود کو چلانے کے لیے یہ گھڑی جسم کی اضافی حرارت کو توانائی میں تبدیل کرے گی۔ اس دعوے پر گھڑی پوری تو اتری لیکن مسئلہ یہ تھا کہ یہ بہت بنیادی نوعیت کی گھڑی تھی اور بہت محدود کام کرتی تھی۔

اب میٹرکس نے پاور واچ ایکس جاری کردی ہے جو نیا اپڈیٹڈ ورژن ہے اور بلوٹوتھ کے ذریعے اسمارٹ فون نوٹیفکیشن وصول کرنے جیسی سہولیات کے ذریعے ایک حقیقی اسمارٹ واچ بن چکا ہے۔

لاس ویگاس میں جاری کنزیومر الیکٹرونکس شو میں پیش کردہ یہ گھڑی عام اسمارٹ واچز کے مقابلے میں کچھ بڑی نظر آتی ہے البتہ توقع سے کہیں ہلکی ہے اور پہننے میں آسان بھی ۔

میٹروکس واحد ادارہ نہیں ہے جو اسمارٹ واچ کے چارجنگ کے مسئلے سے چھٹکارے کے لیے کام کررہا ہے۔ ہم کائی نیٹک چارجنگ یا سولر پاور کے ذریعے چلنے والی اسمارٹ واچز کے بارے میں کافی کچھ دیکھ رہے ہیں۔

پاور واچ ایکس 250 ڈالرز میں دستیاب ہوگی اور یہ 2018ء کی پہلی سہ ماہی میں ہی فروخت کے لیے پیش کردی جائے گی۔