جنوبی کوریا کا انٹرنیٹ، اب اور بھی تیز

1,067

جنوبی کوریا گھر ہے دنیا کے تیز ترین انٹرنیٹ کا، اور اب تو یہ مزید تیز ہو گیا ہے۔

ملک میں انٹرنیٹ فراہم کرنے والے ادارے ایس کے براڈبینڈ نے 2.5 گیگابٹس فی سیکنڈ کی رفتار سے چلنے والا انٹرنیٹ پیش کردیا ہے۔ یہی نہیں بلکہ یہ کمپنی رواں سال کی دوسری ششماہی میں 5 اور 10 جی بی فی سیکنڈ کا انٹرنیٹ فراہم کرے گا۔ یعنی جنوبی کوریا کے تیز رفتار انٹرنیٹ کا دنیا بھر میں کوئی مقابل نہیں دور تک، بلکہ بہت دور تک! ترقی یافتہ امریکا کو ہی دیکھ لیں کہ جہاں گزشتہ سال اوسط انٹرنیٹ کنکشن رفتار 18.7 میگابٹس فی سیکنڈ ہے۔

بہرحال، یہ اعلان اس وقت ہوا ہے جب جنوبی کوریا کی حکومت کی جانب سے 10 جی بی پی ایس انٹرنیٹ کی کمرشلائزیشن کو تیز کرنے کے لیے دو اداروں کا انتخاب ہوئے دو ماہ گزر چکے ہیں۔ ملک اگلے سال مارچ میں 5جی کو بھی کمرشلائز کرے گا۔

یہ تازہ ترین کامیابی گیگابٹ پیسِو آپٹیکل نیٹ ورک یا GPON ٹیکنالوجی کے ذریعے حاصل کی گئی ہے، جو انٹرنیٹ کو صرف ایک کیبل کے ساتھ 52.5 جی بی پی ایس کی طوفانی رفتار تک پہنچاتی ہے، وہ بھی 128 سبسکرائبرز کے ساتھ۔

مختلف ڈیوائسز جیسا کہ فونز، ٹیبلٹس وغیرہ کو جوڑا جائے تو ہر ڈیوائس 1 جی بی پی ایس کی رفتار تو حاصل کرے گی ہی۔ ادارے کا کہنا ہے کہ اوسط صارف 833 ایم بی پی ایس کی رفتار پائے گا۔

ایس کے براڈبینڈ 2020ء تک 933 ملین ڈالرز کی سرمایہ کاری سے اس میں 40 سے 80 فیصد تک اضافہ بھی کرے گا۔

لیکن یاد رکھیں، یہ ایشیا تیز ترین انٹرنیٹ نہیں ہے۔ سنگاپور میں 100 جی بی پی ایس کا کا پہلا 2014ء میں کنکشن چند جامعات کے سائنس دانوں اور طلبہ کے درمیان رابطے کے لیے قائم کیا گیا تھا، جس کی بدولت وہ 12.5 جی بی پی ایس کی رفتار سے فائلیں منتقل کر رہے ہیں۔