اسپیس ایکس کے فالکن 9 کی کامیاب پرواز، لیکن نوک تباہ

1,085

ایلون مسک کی کمپنی اسپیس ایکس کی جانب سے تیار کردہ فالکن 9 راکٹ نے 10 مزید سیارچے کامیابی کے ساتھ خلاء میں پہنچا دیے۔ لیکن کوشش کے باوجود راکٹ کی کون( سرے پر موجود اہم اور قیمتی حصہ جس کی مالیت لاکھوں ڈالر ہوتی ہے) کو واپس حاصل نہیں کیا جا سکا۔ اہم بات یہ ہے کہ یہ راکٹ پہلے بھی چار بار استعمال کیا جاچکا ہے۔ یعنی اسے بار بار استعمال کیا جاسکتا ہے۔

واضح رہے کہ ایلون مسک کی جانب سے ایسے راکٹس کو تیار کرنے کی کوشش کی جا رہی ہے جو کم خرچ ہونے کے ساتھ ساتھ بار بار استعمال کیے جا سکیں۔ تا کہ خلائی سفر کو بھی ایک عام کمرشل طیارے کے سفر جیسا بنایا جا سکے۔ اسی سلسلے میں اس بار ایلون مسک کی یہ کوشش تھی کہ راکٹ کے سرے پر موجود نوک جِسے "فئیرنگ” بھی کہا جاتا ہے اسے واپس حاصل کیا جا سکے لیکن اس میں ناکامی کا سامنا کرنا پڑا۔

فئرنگ راکٹ کے سرے ناک نما ایک ایسی ساخت ہوتی ہے کو راکٹ کو خلاء میں پرواز کے وقت جلنے سے بچاتی ہے۔ راکٹ جونہی محفوظ مقام پر پہنچتا ہے یہ نوک دو حصوں میں تقسیم ہو کر واپس زمین پر گر جاتی ہے۔ چونکہ اسے بننے میں خطیر لاگت صرف ہوتی ہے اس لیے ٹیسلا کمپنی کی یہ خواہش ہے کہ اسے بار بار استعمال کے قابل بنایا جا سکے۔ تا ہم فی الحال کوشش کے باوجود بھی اس بار اس خواہش کو عملی جامہ نہیں پہنایا جا سکا۔ البتہ ٹیسلا کے فالکن 9 راکٹ نے 10 سیارچوں کو خلاء میں ان کے مقرر کردہ مقام پر بحفاظت پہنچا دیا۔

قارئین کی دلچسپی کے لیے ہم یہ بتاتے چلیں کہ دس اریڈیم سیارچوں کی کھیپ پر مشتمل فالکن 9 راکٹ کی یہ پانچویں پرواز تھی۔ یہ سیارچے اریڈیم کمپنی کی کے اس پروگرام کا حصہ ہیں جس میں نچلے زمینی مدار میں 81 سیارچے پہنچا کر مستقبل کا ایک بڑا اور وسیع مواصلاتی نیٹورک قائم کیا جائے گا۔ اس منصوبے پر کل 3 ارب ڈالر کی لاگت آئے گی۔