ٹیلی گرام کو ایپ اسٹور سے نکال دیں، روس کا ایپل سے مطالبہ

2,414

اپریل میں محفوظ میسیجنگ ایپ ٹیلی گرام پر روس میں پابندی لگا دی گئی تھی لیکن اب بھی یہ ایپ ایپل کے ایپ اسٹور کے روسی ورژن میں موجود ہے۔ ٹیلی گرام کو مکمل طور پر بند کرنے کے لیے ایک اور قدم اٹھاتے ہوئے روس اب ایپل سے کہہ رہا ہے کہ وہ اپنے ایپ اسٹور سے ٹیلی گرام کو نکال دے اور مقامی صارفین کو پش نوٹیفکیشنز بھیجنے سے روک دے۔ حکام کاکہنا ہے کہ وہ ادارے کو ایک ماہ کی مہلت دے رہے ہیں کہ وہ تسلیم کرے جس کے بعد اسے خلاف ورزی پر سزا کا سامنا ہوگا۔

ماسکو میں قائم اس ایپ کو اپریل میں اس وقت مسئلے کا سامنا کرنا پڑا تھا جب اس نے روس کی وفاقی سکیورٹی سروسز کو انکرپشن کیز دینے سے انکار کردیا تھا۔ جس پر عدالت نے ٹیلی گرام پر پابندی عائد کردی تھی اور کہا تھا کہ خطرہ موجود ہے کہ اس کا پلیٹ فارم مجرم اور دہشت گرد اپنی کارروائیوں کے لیے استعمال کریں۔ پھر مئی کے اوائل میں روس نے 50 وی پی این سروسز اور انٹرنیٹ پر بے نام کرنے والی سروسز روک دیں تاکہ ٹیلی گرام کی رسائی کو محدود کیا جا سکے۔

لیکن ان تمام کوششوں کے باوجود روس کے صارفین کی اکثریت اب بھی ٹیلی گرام ایپ تک رسائی رکھتی ہے، جس کے بارے میں گزشتہ روز سرکاری سنسرشپ ادارے نے بھی بتایا۔ صرف 15 سے 30 فیصد ٹیلی گرام آپریشنز ہی اب تک متاثر ہوئے ہیں، جس کی وجہ سے روس کو ایپل سے رابطہ کرنا پڑا ہے کہ وہ ایپ کو بند کرے۔ سرکاری ادارہ گوگل سے بھی رابطے میں ہے تاکہ اسے گوگلے پلے اسٹور سے بھی نکلوا سکے۔

گو کہ ایپل انکرپشن اور محفوظ ڈیٹا کا حامی رہا ہے لیکن یہ مقامی مطالبوں پر رعایت بھی دیتا ہے۔ چین میں ادارے نے اپنے اسٹور سے مختلف وی پی این ایپس نکالیں اور اپنے آئی کلاؤڈ آپریشنز کو ایک مقامی ادارے کے سپرد کیا جو چینی حکومت کے ساتھ تعلق رکھتا ہے۔