ونڈوز 10 پر حملہ آور ڈھیٹ ترین میل وئیر دریافت

3,075

اینٹی وائرس بنانے والی سائبر سیکورٹی کمپنی "بٹ ڈیفینڈر” نے خبردار کیا ہے کہ سال 2012 میں دریافت ہونے والا زیکنلو نامی ایڈ وئیر پہلے سے کہیں زیادہ طاقتور ہو گیا ہے۔ اور اب اسے اینٹی وائرس پروگرام کی مدد سے بھی ختم نہیں کیا جا سکتا۔

بٹ ڈیفینڈر کے مطابق یہ ایڈ وئیر ایک جعلی وی پی این سافٹ وئیر S5Mark کی مدد سے کمپیوٹر میں انسٹال ہو کر تباہی پھیلاتا ہے۔ اس ایڈ وئیر کا زیادہ تر شکار ونڈوز 10 کے صارفین ہیں۔ جن کے کمپیوٹرز میں خاموشی سے انسٹال ہو کر پس پردہ رہتے ہوئے سسٹم کی تمام معلومات ایک ریموٹ کمانڈ اینڈ کنٹرول مرکز میں بھجواتا ہے۔ جہاں سے اسے سسٹم میں انسٹال شدہ اینٹی وائرس اور اینٹی میل وئیر کو ڈس ایبل یا ان انسٹال کرنے کی ہدایات ملتی ہیں۔

اس ایڈ وئیر کی ایک اور بڑی خاصیت یہ ہے کہ یہ روٹ کٹ ہے۔ یعنی آپریٹنگ نظام کے سب سے نچلے درجے پر انسٹال ہوتا ہے۔ اس لیے اسے شناخت کرنا یا اس کا خاتمہ کرنا انتہائی مشکل ہے۔

بٹ ڈیفینڈر کا کہنا ہے کہ اس ایڈ وئیر کو ختم کرنے کے لیے متبادل طریقہ کار یعنی ایک علحیدہ ریسیکو ڈسک کا استعمال کریں۔ یہ ڈسک ایک خاص لینکس نظام سے بوٹ ہو کر ونڈوز آپریٹنگ نظام کو چلائے بغیر پوری ڈرائیو کو اسکین کرے گی۔

اگر خدانخواستہ آپ بھی اس ڈھیٹ ایڈوئیر کا شکار ہو چکے ہیں تو اس ریسیکو ڈسک کو تیار کرنے کے لیے اس لنک سے مدد لے سکتے ہیں۔