یوٹیوب گو پاکستان سمیت 130 ملکوں میں

2,359

ابھرتی ہوئی مارکیٹوں کے لیے یوٹیوب کے موبائل ورژن یوٹیوب گو (Youtube Go) کو آج دنیا بھر کے 130 سے زیادہ ممالک تک پھیلا دیا گیا ہے۔ یہ خاص ورژن آف لائن ویونگ (offline viewing) اور قریبی فونز پر شیئرنگ سمیت کئی بہترین خصوصیات رکھتا ہے اور یوٹیوب کو اُن صارفین تک پہنچنے میں مدد دے گا جو یوٹیوب وڈیوز تو دیکھنا چاہتے ہیں، لیکن اچھا انٹرنیٹ کنکشن نہیں رکھتے یا بیشتر وقت آف لائن رہتے ہیں۔

نئے ممالک کی فہرست میں سے پاکستان کے علاوہ بیشتر وسطی و جنوبی امریکا، مشرق وسطیٰ، افریقہ، کیریبیئن، ایشیا اور دیگر علاقوں کے ملک شامل ہیں۔ یوٹیوب گو ایپ پہلی بار ستمبر 2016 میں متعارف کروائی گئی تھی، اور گزشتہ سال موسم بہار میں اس کا بیٹا ورژن لانچ ہوا تھا۔ اُبھرتی ہوئی مارکیٹوں کے لیے دیگر ایپس کی طرح یوٹیوب گو بھی ڈیٹا پر آنے والی بھاری لاگت، خراب سگنلز اور اینڈرائیڈ ڈیوائسز پر ایس ڈی کارڈز کے عام رحجان پر غور کرکے پیش کی گئی ہے۔

یہ ایپ نوآموز کے صارفین کم کوالٹی کے اسٹریمز کا انتخاب کرکے اپنے پلے بیک تجربے کو بہتر بنا سکتے ہیں یا پھر پلے بیک کے لیے وڈیوز کو محفوظ بھی کر سکتے ہیں تاکہ آف لائن ہوتے ہوئے بھی وڈیوز دیکھ سکیں۔ آف لائن پلے فیچر صارفین کو اپنے فون یا ایس ڈی کارڈ میں وڈیو محفوظ کرنے کی سہولت دیتا ہے۔ یہاں تک کہ آپ ڈاؤنلوڈ کرنے کا فیصلہ کرنے سے پہلے وڈیو پری ویو (preview) بھی دیکھ سکتے ہیں۔

یوٹیوب گو کی ایک اور زبردست خاصیت اس کا شیئرنگ فیچر ہے جو آپ کو اپنے قریب موجود دوستوں کے ساتھ وڈیو شیئر کرنے کی سہولت دیتا ہے۔ یعنی جہاں اچھا کنکشن موجود نہ ہو وہاں پر یوٹیوب گو قریب موجود ڈیوائسز پر بھی شیئرنگ کر سکتا ہے۔ یہ فیچر بلوٹوتھ کا استعمال کرتے ہوئے دو فونز کو باہم جوڑتا ہے، پھر وائی فائی ہاٹ اسپاٹ اور وائی فائی ڈائریکٹ کو استعمال کرکے وڈیو کو ٹرانسفر کرتا ہے۔ یوٹیوب کا کہنا ہے کہ ایپ دو فونز کے درمیان ایک محفوظ وائرلیس چینل بناتی ہے اور مستحکم وائرلیس اور انکرپشن پروٹوکولز کا استعمال کرتی ہے۔ وصول کرنے والا یوٹیوب ایپ میں وڈیو چلانے سے پہلے یوٹیوب کے سرورز سے ایک یونیک ڈیکرپشن (decryption) کی ڈاؤنلوڈ کرتا ہے۔

ادارے کا کہنا ہے کہ وہ پروٹوکولز پر ہمیشہ تجربات کرتا رہتا ہے اور ہو سکتا ہے انہیں مستقبل میں تبدیل کرے تاکہ "تیز ترین، قابل بھروسہ اور محفوظ کنکشنز کو ڈیوائسز کی وسیع تر اقسام پر لائے۔”

مزید برآں، یوٹیوب گو کی ہوم اسکرین مقامی طور پر مشہور ہونے والی وڈیوز کی حامل ہوگی اور وہی وڈیوز جو صارف کی زبان میں ہوں گی۔

یوٹیوب گو کی پہلی مارکیٹ بھارت تھا، لیکن گزشتہ سال میں یہ انڈونیشیا، نائیجیریا، تھائی لینڈ اور دیگر 14 ممالک تک پھیلایا گیا۔ اب یہ دنیا کے کئی اہم ممالک تک آ گیا ہے لیکن دلچسپ بات یہ ہے کہ دنیا کی سب سے بڑی مارکیٹ امریکا میں موجود نہیں۔

اس نئی لانچنگ کے ساتھ ایپ کے ڈیزائن میں بھی کچھ بہتریاں کی گئی ہیں جو دراصل صارفین کے فیڈبیک کی بنیاد پر ہوئی ہیں۔

اب یوٹیوب گو صارفین کو بنیادی اور اسٹینڈرڈ کوالٹی کے ساتھ ساتھ ہائی کوالٹی میں بھی وڈیو کو ڈاؤنلوڈ، اسٹریم یا شیئر کرنے کا آپشن دیتا ہے، تاکہ اس وقت جب اچھے سگنل یا تیز رفتار وائی فائی کنکشن دستیاب ہو تو صارف وڈیو کو ڈاؤنلوڈ کر سکے۔

یوٹیوب گو گوگل کے ایپ اسٹور پر یہاں سے ڈاؤنلوڈ کی جا سکتی ہے۔

یوٹیوب گو سمیت گوگل کئی ایسی ایپس جاری کر چکا ہے جو ابھرتی ہوئی مارکیٹوں کے لیے ہیں اور جیسا کہ اینڈرائیڈ گو، فائلز گو، ڈیٹالی، گوگل میپس گو، جی میل گو، گوگل گو اور گوگل اسسٹنٹ گو وغیرہ۔